Thursday , June 21 2018
Home / Top Stories / اوڈیشہ میں زبردست بارش سے معمولاتِ زندگی درہم برہم

اوڈیشہ میں زبردست بارش سے معمولاتِ زندگی درہم برہم

بھوبنیشور۔ 3؍اگسٹ (سیاست ڈاٹ کام)۔ اوڈیشہ کے کئی علاقوں میں موسلادھار بارش ہونے کی وجہ سے معمولاتِ زندگی درہم برہم ہوگئے۔ بارش کے ساتھ ساتھ تیز رفتار آندھی بھی چل رہی تھی جس کی پہلے سے ہی پیش قیاسی کی گئی تھی۔ محکمہ موسمیات کے بموجب ہوا کا کم دباؤ آئندہ دو دن زبردست بارش اور تیز رفتار آندھی کی وجہ بنے گا۔ ڈائریکٹر مقامی موسمیات

بھوبنیشور۔ 3؍اگسٹ (سیاست ڈاٹ کام)۔ اوڈیشہ کے کئی علاقوں میں موسلادھار بارش ہونے کی وجہ سے معمولاتِ زندگی درہم برہم ہوگئے۔ بارش کے ساتھ ساتھ تیز رفتار آندھی بھی چل رہی تھی جس کی پہلے سے ہی پیش قیاسی کی گئی تھی۔ محکمہ موسمیات کے بموجب ہوا کا کم دباؤ آئندہ دو دن زبردست بارش اور تیز رفتار آندھی کی وجہ بنے گا۔ ڈائریکٹر مقامی موسمیات مرکز سرت ساہو نے کہا کہ مغربی اوڈیشہ کے بیشتر علاقوں میں موسلادھار بارش ہورہی ہے۔ سب سے زیادہ بارش 200.7 ملی میٹر سمبل پور میں ریکارڈ کی گئی ہے۔

معمولاتِ زندگی مغربی اوڈیشہ کے شہر سمبل پور میں مفلوج ہوگئے۔ نشیبی علاقے اور سڑکیں زبردست بارش کی وجہ سے زیر آب آگئے۔ گاڑیوں کی نقل و حرکت مفلوج ہوگئی، کیونکہ کئی علاقوں میں سڑکیں زیر آب ہیں۔ دکانیں اور کاروباری ادارے بند کردیئے گئے۔ محکمہ موسمیات کے بموجب مسلسل بارش سے چاندبالی کے علاقہ میں 80 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی جب کہ ٹٹلاگڑھ میں 43.8، پھولبنی میں 43، پردیپ میں 41 اور کوراپوٹ میں 30 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی۔ دارالحکومت بھوبنیشور میں 17.9 ملی میٹر بارش سے شہر کے کئی علاقے بشمول اچاریہ وہار، جئے دیو وہار، رسول گڑھ، بومیکھل اور جی جی پی کالونی میں پانی جمع ہوگیا۔

محکمہ موسمیات کے بموجب اوڈیشہ کے بیشتر علاقوں میں آئندہ 48 گھنٹے کم دباؤ کے زیر اثر جو شمالی خلیج بنگال اور پڑوسی علاقوں میں قائم ہیں، زبردست بارش اور گرج چمک کے ساتھ بارش ہونے کا امکان ہے۔ اسی طرح منتشر انتہائی بارش کی وجہ سے شمالی اوڈیشہ کے اِکادکا مقامات پر زبردست بارش ہوئی اور جنوبی اوڈیشہ کے ایک دو مقامات پر آئندہ 24 گھنٹوں میں بارش کا اندیشہ ہے۔ کم دباؤ کے زیر اثر تیز رفتار آندھی جس کی رفتار 45 تا 55 کیلو میٹر فی گھنٹہ ہوسکتی ہے اور ساحلی اوڈیشہ کے علاقہ میں 60 کیلو میٹر فی گھنٹہ ہوسکتی ہے، چلے گی۔ ماہی گیروں کو ہدایت دی گئی ہے کہ وہ سمندر میں نہ جائیں۔

TOPPOPULARRECENT