Sunday , November 19 2017
Home / شہر کی خبریں / اُردو قلمکاروں نے فارم کی خانہ پُری نہیں کی قومی کونسل برائے فروغ اُردو کی سبکی

اُردو قلمکاروں نے فارم کی خانہ پُری نہیں کی قومی کونسل برائے فروغ اُردو کی سبکی

حیدرآباد 20 مارچ (سیاست نیوز) غیرت مند اردو قلمکاروں نے مرکزی وزارت فروغ انسانی وسائل کی قومی کونسل برائے فروغ اُردو کی ہوا نکال دی جبکہ اُردو قلمکاروں نے قومی کونسل برائے فروغ اُردو کے اس فارم کی خانہ پُری نہیں کی جس میں اُردو مصنفین سے یہ اعلان کرنے کے لئے کہا گیا تھا کہ وہ حکومت یا ملک کے خلاف کچھ نہیں لکھیں گے۔ ملک کے خلاف کچھ لکھنے کا تو سوال ہی پیدا نہیں ہوتا لیکن یہ اعلان کرنا مضحکہ خیز ہے کہ حکومت کے خلاف کچھ نہیں لکھا جائے گا۔ تنقید تو جمہوریت کی جان ہے اور جمہوری سماج میں کوئی حکومت تنقید سے بالاتر نہیں ہوتی۔ ایسا محسوس ہوتا ہے کہ قومی کونسل برائے فروغ اُردو نے مرکزی وزیر فروغ انسانی وسائل سمرتی ایرانی کی خوشنودی حاصل کرنے کے لئے یہ شوشہ چھوڑا کہ اُردو قلمکار اپنی تحریروں میں حکومت پر تنقید نہیں کریں گے۔ تمام گوشوں سے تعلق رکھنے والے اُردو قلمکاروں میں کسی نے بھی فارم کی خانہ پُری نہیں کی اور آخرکار کونسل برائے فروغ کو یہ وضاحت کرنی پڑی کہ اس کا مقصد اس بات کو یقینی بنانا تھا کہ ایسا مواد شائع ہو جس سے سماج کے مختلف طبقات میں ہم آہنگی اور خیرسگالی پیدا ہو۔ کونسل برائے فروغ اُردو نے یہ صراحت کی کہ فارم کی خانہ پُری کا عمل گزشتہ کئی برسوں سے جاری ہے۔

TOPPOPULARRECENT