آئندہ تعلیمی سال سے ہر ضلع میں لڑکیوں کیلئے اقامتی ڈگری کالج کا قیام

حیدرآباد۔/20مارچ، ( سیاست نیوز) ڈپٹی چیف منسٹر و وزیر تعلیم کڈیم سری ہری نے اعلان کیا کہ آئندہ تعلیمی سال سے ہر ضلع میں لڑکیوں کیلئے ایک اقامتی ڈگری کالج قائم کیا جائے گا۔ وقفہ سوالات کے دوران وزیر تعلیم نے کہا کہ خواتین میں تعلیم ترک کرنے کے رجحان کو دیکھتے ہوئے حکومت نے ہر ضلع میں ریزیڈنشیل ڈگری کالج کے قیام کا فیصلہ کیا ہے۔ یہ کالج

حیدرآباد۔/20مارچ، ( سیاست نیوز) ڈپٹی چیف منسٹر و وزیر تعلیم کڈیم سری ہری نے اعلان کیا کہ آئندہ تعلیمی سال سے ہر ضلع میں لڑکیوں کیلئے ایک اقامتی ڈگری کالج قائم کیا جائے گا۔ وقفہ سوالات کے دوران وزیر تعلیم نے کہا کہ خواتین میں تعلیم ترک کرنے کے رجحان کو دیکھتے ہوئے حکومت نے ہر ضلع میں ریزیڈنشیل ڈگری کالج کے قیام کا فیصلہ کیا ہے۔ یہ کالجس ضلع کے ایسے علاقے میں قائم کئے جائیں گے جہاں اس کی سخت ضرورت ہو۔ کڈیم سری ہری نے کہا کہ ڈگری کالجس کی کمی کے باعث اکثر دیکھا جارہا ہے کہ والدین ایس ایس سی اور انٹر کے بعد لڑکیوں کی تعلیم جاری رکھنے سے قاصر ہیں کیونکہ انہیں ڈگری کی تکمیل کیلئے دور دراز کے علاقوں کا رُخ کرنا پڑ رہا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ تلنگانہ میں جملہ 166 ڈگری کالجس ہیں جن میں 22 گورنمنٹ ویمنس ڈگری کالج ہیں۔ سرکاری جونیر و ڈگری کالجس میں بنیادی سہولتوں کی کمی سے متعلق ارکان کی شکایت پر کڈیم سری ہری نے اعتراف کیا کہ کئی مقامات پر فیکلٹیز، لیاب اور انفراسٹرکچر کی کمی کے بارے میں شکایات ملی ہیں۔ حکومت ترجیحی بنیاد پر ان ضرورتوں کی تکمیل پر توجہ دے گی۔ انہوں نے کہا کہ سابق حکومت نے 17 ڈگری کالجس کو منظوری دی تھی لیکن وہاں لکچررس اور بنیادی سہولتیں فراہم نہیں کی گئیں ان میں گولکنڈہ میں قائم کیا گیا کالج بھی شامل ہے۔ انہوں نے تیقن دیا کہ تمام 17ڈگری کالجس میں لکچررس، نان ٹیچنگ اسٹاف، بنیادی سہولتوں کی فراہمی اور انفراسٹرکچر کو ترجیحی بنیادوں پر پورا کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے لڑکیوں کی تعلیم پر خصوصی توجہ کی ہدایت دی ہے اور آئندہ تعلیمی سال سے اس سلسلہ میں کئی قدام اٹھائے جائیں گے۔ خواتین کی تعلیم کی اہمیت کو اُجاگر کرتے ہوئے کڈیم سری ہری نے کہا کہ حکومت ویمنس کالجس کے علاوہ کو ایجوکیشن کے اداروں میں بھی درکار سہولتوں کو پورا کرے گی۔

TOPPOPULARRECENT