Wednesday , November 22 2017
Home / ہندوستان / آئی ایس کارندوں کو اعتراف جرم پر 7 سال کی جیل

آئی ایس کارندوں کو اعتراف جرم پر 7 سال کی جیل

نئی دہلی 21 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) ایک خصوصی عدالت میں آج آئی ایس آئی ایس کے دو نوجوانوں کو 7 سال جیل کی سزا سنائی جبکہ اُنھوں نے اعتراف گناہ کیا۔ عدالت نے کہاکہ کچھ حد تک رعایت برتنے کی ضرورت ہے کیوں کہ اُنھیں خود کی اصلاح کرنے اور اچھے شہری بننے کا موقع حاصل ہونا چاہئے۔ ڈسٹرکٹ جج امرناتھ نے جموں و کشمیر کے اظہر الاسلام (24 سال) اور مہاراشٹرا کے محمد فرحان شیخ (25 سال) کو مجرم قرار دیا جبکہ دونوں نے مجرمانہ سازش رچاتے ہوئے فنڈس اکٹھا کرنے اور دہشت گرد تنظیم آئی ایس آئی ایس کے لئے لوگوں کی بھرتی کرنے کے جرم کا اعتراف کرلیا۔ جج نے کہاکہ ایسا ظاہر ہوتا ہے کہ اُنھوں نے اپنی غلطیوں کو سمجھ لیا اور اپنی حرکتوں پر نادم ہیں۔ اِس میں کوئی شبہ نہیں کہ وہ دہشت گرد تنظیم کے ارکان ہیں اور خود سے اُن کی سرگرمیوں سے وابستہ ہوئے۔ یہ چیز ہوسکتا ہے اُن کی غلط رہبری یا ذہنی پختگی کے فقدان اور حالات کے سبب ہوگئی۔ جج نے کہاکہ عدالت کو اُن کے اقبال جرم کے مثبت پہلوؤں کو ملحوظ رکھنے کی ضرورت ہے اور ظاہر طور پر اُنھیں اپنی حرکتوں پر تاسف ہوا ہے۔ ایسی صورت میں مجرمین کو اپنی اصلاح کرنے اور اِس ملک کے اچھے شہری بننے کا موقع حاصل ہونا چاہئے۔ یہی باتوں کو ملحوظ رکھتے ہوئے تعین سزا میں کچھ رعایت برتی گئی تاکہ سماج کو صحیح پیغام جائے کہ مجرمین کو سزا ضرور ملے گی لیکن اصلاح کے خواہشمند افراد کو کچھ رعایت بھی حاصل ہوگی۔ یہ ملزمین اپنے خلاف عدالت کی جانب سے وضع الزامات کے بعد زائداز ایک ماہ قبل اپنے موقف سے پلٹتے ہوئے اِس عدالت سے رجوع ہوئے تھے۔ ملزمین نے ایڈوکیٹ ایم ایس خان کے ذریعہ درخواست داخل کرتے ہوئے کہا تھا کہ وہ اپنے خلاف الزام عائد کی گئی حرکتوں پر نادم ہیں۔ اِن کے خلاف ماضی کا کوئی مجرمانہ ریکارڈ نہیں اور وہ اصل دھارے میں شامل ہونا چاہتے ہیں۔ نیز سماج کے لئے ثمرآور بنتے ہوئے اپنی بازآبادکاری کے خواہشمند ہیں۔ اس عرضی میں کہا گیا تھا کہ درخواست گذار نوجوان کسی دباؤ، دھمکی، جبر یا بیجا اثر  کے بغیر اپنی غلطیوں کا اعتراف کرتے ہیں۔ اِس عدالت نے گزشتہ ماہ یہ دونوں ملزمین اور 36 سالہ عدنان حسن کے خلاف الزامات وضع کئے تھے کہ اُنھوں نے آئی ایس آئی ایس کے لئے فنڈس اکٹھا کرنے کی مجرمانہ سازش رچائی اور اِس دہشت گرد تنظیم کے لئے لوگوں کی بھرتی کی کوشش بھی کی۔ حسن کے خلاف ٹرائیل اِسی عدالت میں علیحدہ طور پر جاری ہے۔

TOPPOPULARRECENT