Sunday , December 17 2017
Home / Top Stories / آدھارکو پین کارڈ سے منسلک کرنے کا قانون برقرار

آدھارکو پین کارڈ سے منسلک کرنے کا قانون برقرار

آدھار کارڈ نہ رکھنے والوں کو فی الحال استثنیٰ، رشوت پر قابو پانے آدھار لازمی، سپریم کورٹ کا حکم
نئی دہلی۔ 9جون (سیاست ڈاٹ کام) سپریم کورٹ نے انکم ٹیکس ریٹرنس کے ادخال اور مستقل اکاونٹ نمبر پین کے الاٹمنٹ کیلئے آدھار کو لازمی بنانے والے قانون کی اہمیت کو برقرار رکھا ہے۔ البتہ فی الحال جن کے پاس آدھار کارڈ نہیں ہے انہیں پین کارڈ سے منسلک کرنے سے استثنیٰ دیا ہے۔ یہ جزوی حکم التواء ہے۔ عدالت نے رولنگ دیتے ہوئے کہا کہ جن لوگوں کے پاس آدھار کارڈ آج کی تاریخ تک نہیں ہے، وہ بھی اپنا انکم ٹیکس ریٹرنس داخل کرسکتے ہیں۔ تاہم جن کے پاس شناختی دستاویز ہے انہیں اپنے پیان کارڈ سے اسے مربوط کرنا چاہئے۔ 115 کروڑ کی آبادی کے منجملہ 35 فیصد آبادی کے پاس پہلے ہی آدھار کارڈ پہنچ چکا ہے۔ مرکز کی جانب سے داخل کردہ حلفنامہ میں یہ بات بتائی گئی۔ قبل ازیںسپریم کورٹ نے پین کارڈ کوآدھار سے جوڑنے کو لازمی بنانے سے متعلق مرکز کے حکم پر آج روک لگا دی۔جسٹس اے کے سیکری اور جسٹس اشوک بھوشن کی بنچ نے کہا کہ آئینی بینچ کا فیصلہ آنے تک روک لگی رہے گی۔ بنچ نے چار مئی کو حکومت کے حکم کے خلاف درخواستوں پر سماعت مکمل کر تے ہوئے فیصلہ محفوظ رکھ لیا تھا۔یہ عرضیاں کمیونسٹ پارٹی کے سینئر لیڈر بنائي وشوام، دلت کارکن بیجواڑا ولسن اور ریٹائرڈ فوجی آفیسر ایم جی ومباتکیرے نے دائر کی تھی۔درخواستوں میں انکم ٹیکس ایکٹ کی دفعہ 139 اے اے کو چیلنج کیا گیا تھا۔رواں مالی سال کے عام بجٹ اور مالیاتی بل 2017کے ذریعے پین کارڈ کو آدھار سے منسلک کرنے کو لازمی بنایا گیا تھا۔بنچ نے کہا کہ ایسے انکم ٹیکس ریٹرن بھرنے والے افراد جن کے پاس آدھار اور پین کارڈ دونوں ہیں، انہیں اپنی ریٹرن داخل کرتے وقت اس کی اطلاع دینی ہوگی۔ ایسے لوگ جن کے پاس آدھار کارڈ نہیں ہیں،  صرف پین کارڈ ہے ، وہ پین کارڈ کے ذریعے اپنا ریٹرن داخل کر سکیں گے ۔عدالت نے حکومت سے آدھار کارڈ کی حفاظت کو یقینی بنانے اور اس کا ایسا مناسب انتظام کرنے کے لئے کہا کہ جس سے آدھار کا ڈیٹا لیک نہیں ہو۔ اس کے علاوہ آدھار کا ڈپلیکیشن(فرضی) نہیں ہو اس پر بھی کام کرناضروری ہے ۔ انکم ٹیکس ایکٹ کی دفعہ 139 اے اے کے تحت یکم جولائی سے انکم ٹیکس ریٹرن دائر کرنے کے دوران یا پین کارڈ الاٹمنٹ کیلئے آدھارکو شامل کرنا لازمی کیا گیا تھا۔ درخواست گزاروں کا کہنا تھا کہ مرکز سپریم کورٹ کے اس حکم کی اہمیت کو کم نہیں کر سکتا جس میں آدھار کو رضاکارانہ بتایا گیا تھا۔کانگریس نے آج آدھار کارڈ کو سپریم کورٹ کی جانب سے انکم ٹیکس کے حسابات کے لئے لازمی قرار دینے پر حکم التواء جاری کرنے کے سپریم کورٹ کے فیصلے کا خیرمقدم کیا۔ کانگریس کے ترجمان ٹام وڈکن نے کہاکہ اِس فیصلے کا خیرمقدم کیا جانا چاہئے۔ غالباً سپریم کورٹ کو مسئلے کے نجی ہونے کا احساس ہوگیا ہے۔ اُنھوں نے کہاکہ یہ ایک سنگین انفرادی مسئلہ ہے۔

TOPPOPULARRECENT