Wednesday , January 17 2018
Home / Top Stories / آسام حملہ آوروں کیخلاف سخت کارروائی کرنے حکومت کا وعدہ

آسام حملہ آوروں کیخلاف سخت کارروائی کرنے حکومت کا وعدہ

گوہاٹی ؍ سونت پور 25 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) مرکز نے آج وعدہ کیا ہے کہ این ڈی ایف بی (ایس) کے خلاف سخت ترین اقدامات کئے جائیں گے اور وہ اِس تنظیم کے خلاف کارروائی کرنے کے لئے بھوٹان سے رجوع ہونے کا ارادہ رکھتا ہے تاکہ الفا کے خلاف بھی کارروائی کے لئے تعاون حاصل کیا جاسکے۔ بوڈو دہشت گردوں کے حملوں میں ہلاک ہونے والوں کی تعداد 78 ہوگئی ہے۔ ا

گوہاٹی ؍ سونت پور 25 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) مرکز نے آج وعدہ کیا ہے کہ این ڈی ایف بی (ایس) کے خلاف سخت ترین اقدامات کئے جائیں گے اور وہ اِس تنظیم کے خلاف کارروائی کرنے کے لئے بھوٹان سے رجوع ہونے کا ارادہ رکھتا ہے تاکہ الفا کے خلاف بھی کارروائی کے لئے تعاون حاصل کیا جاسکے۔ بوڈو دہشت گردوں کے حملوں میں ہلاک ہونے والوں کی تعداد 78 ہوگئی ہے۔ آسام میں ہونے والے تشدد کے جواب میں آدی واسیوں نے بھی انتقامی کارروائی کی تھی۔ آج صبح کوکرا جھار کے علاقہ کوسائی گاؤں میں بھی تشدد بھڑک اُٹھا جہاں بوڈو کے کئی مکانات کو آدی واسیوں نے نذر آتش کردیا۔ ان کی یہ کارروائی منگل کے دن بوڈو انتہا پسندوں کے قتل عام کا انتقام سمجھی جارہی ہے۔ ضلع بھر میں غیر معینہ مدت کے کرفیو کے باوجود دوسرے دن بھی تشدد دیکھا گیا۔ مرکزی وزیرداخلہ راج ناتھ سنگھ نے آج سونت پور کا دورہ کیا جو زیریں آسام کے تشدد سے متاثرہ تین اضلاع میں سے ایک ضلع ہے۔ اُنھوں نے بوڈو انتہا پسندوں کی جانب سے کئے گئے خونریز حملوں کے بعد کی صورتحال کا جائزہ لیا اور اعلان کیاکہ مرکز کے دہشت گردی کے خلاف سخت کارروائی کے حصہ کے طور پر این ڈی ایف کے خلاف سخت ترین اقدامات کئے جائیں گے۔ مرکز نے دہشت گردی کا خاتمہ کرنے کے لئے صفر رواداری پالیسی اختیار کی ہے۔ انتہا پسندوں نے سونی پور میں 43 افراد کو ہلاک کیا تھا جبکہ کوکرا جھار میں 25 افراد ہلاک ہوئے اور ضلع چیرانگ میں 3 افراد کو موت کے گھاٹ اُتار دیا گیا۔ منگل کے دن ہوئے اِس قتل عام میں کئی مکانات کو بھی نذر آتش کیا گیا۔ پولیس ترجمان نے کہاکہ آج اِن علاقوں سے 6 نعشیں برآمد کی گئی ہیں۔ اِن میں زیادہ تر خواتین اور بچوں کی نعشیں ہیں۔ تنظیم کے خلاف کارروائیاں کئے جانے سے متعلق پوچھے گئے سوال پر راجناتھ سنگھ نے کہاکہ اِس تنظیم کے خلاف بلاشبہ سخت کارروائی کی جائے گی۔ لیکن یہ نہیں کہا جاسکتا کہ یہ کارروائی کب ہوگی۔ حکومت نے اِس واقعہ کو سنجیدگی سے لیا ہے اور ہم اِن کے خلاف مضبوط اقدامات کرنے کا فیصلہ کرچکے ہیں۔ وزیرداخلہ نے وزیر خارجہ سشما سوراج سے بھی درخواست کی کہ وہ بھوٹان سے مدد طلب کرتے ہوئے ممنوعہ انتہا پسند گروپ سے نمٹنے کے لئے کارروائی کریں۔ وزارت داخلہ کے عہدیدار نے بتایا کہ راجناتھ سنگھ نے کل رات ہی سشما سوراج سے بات کی ہے اور اُن سے درخواست کی کہ ہمالیائی ملک میں اِن کے ہم منصب حکام سے فوری مشاورت کرتے ہوئے تنظیم کے خلاف کارروائی کیلئے پہل کی جائے۔ بوڈو انتہا پسند نے سمجھا جاتا ہے کہ ہند ۔ بھوٹان سرحد سے متصل جنگلاتی علاقہ میں اپنے چند ٹھکانے بنالئے ہیں۔ عہدیداروں نے بتایا کہ جب کبھی سکیوریٹی فورسیس اِن کیڈرس کے خلاف کارروائی کرتے ہیں یہ لوگ بھوٹان کے علاقہ میں روپوش ہوجاتے ہیں۔ اِس لئے انھیں پکڑنا مشکل ہوجاتا ہے۔ 2003-04 ء میں بھوٹان نے الفا انتہا پسندوں کے خلاف بڑے پیمانے پر آپریشن شروع کیا تھا اور اپنے علاقہ سے الفا انتہا پسندوں کے ٹھکانے کا مکمل صفایا کردیا تھا۔

TOPPOPULARRECENT