Sunday , June 24 2018
Home / اضلاع کی خبریں / آسام میں مسلمانوں کے قتل عام کیلئے کانگریس ذمہ دار

آسام میں مسلمانوں کے قتل عام کیلئے کانگریس ذمہ دار

بوڈو عسکریت پسند تنظیم پر پابندی عائد کرنے کا مطالبہ

بوڈو عسکریت پسند تنظیم پر پابندی عائد کرنے کا مطالبہ
گلبرگہ ۔ 6 ۔ مئی (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) حیدرعلی باغبان آرگنائزنگ سیکریٹری کل ہند مجلس تعمیر ملت ضلع گلبرگہ نے آسام کے تازہ تشدد جس میں 31مسلمانوں کا قتل عام ہوا ہے کے لئے کانگریس کو ذمہ دار ٹہرایا ہے ۔ اُنہوں نے مرکزی وزیر داخلہ سشیل کمار شنڈے کے اس بیان پر شدید ردِ عمل کا اظہار کیا ہے کہ آسام میں فساد کے ذریعہ ماحول کو بگاڑنے کی سازش کی گئی ۔ اُنہوں نے استفسار کیا ہے کہ فسادیوں کو گرفتار کرنے کے لئے وزیر داخلہ کے ہاتھ کس نے باند ھ رکھے ہیں ۔ فساد کے خلاف احتجاج کرنے والوں پر لاٹھی چارج اور فائرنگ کی جاتی ہے لیکن فسادیوں کو لوٹ مار اور قتل و غارت گری کی پوری آزادی حاصل ہے ۔ حیدرعلی باغبان نے کانگریس لیڈر احمد پٹیل کے بیان کو منافقانہ قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ وہ مسلمانوں کی نعشوں پر آنسو بہانے کا کام نہ کریں ، اگر اُ ن میں ذرا سی بھی ملی غیرت و حمیت باقی ہے تو وہ چیف منسٹر آسام ترون گوگوئی کو برطرف کرنے کے لئے سونیا گاندھی پر دبائو ڈالیں ۔ انہوں نے مزید کہا ہے کہ 2012کا تشدد ہوکہ حالیہ تشدد اس کی تمام تر ذمہ داری چیف منسٹر آسام ترون گوگوئی پر عائد ہوتی ہے ۔ اگر آسام کا حالیہ تشدد نریندر مودی کی اشتعال انگیز تقریر کے بعد بھڑکا ہے تو چیف منسٹر آسام اور مرکزی وزیر داخلہ نے فساد کو روکنے کے لئے اپنی دستوری ذمہ داریاں کیوں نہیں نبھائیں۔ مسلمانوں کی نعشوں پر سیاست کرنا کانگریس کی قدیم روش ہے۔ حیدرعلی باغبان نے مزید کہا ہے کہ کانگریس کو اگر مسلمانوں کے قتل و خون اور تباہی و بربادی کا ذرا سا بھی احساس ہوتا تو وہ بوڈو لینڈ علاقائی کونسل کو فوری تحلیل کرتی ، ہتھیاروں کی ضبطی عمل میں لاتی ، تشدد ، ہلاکتوں ، آتشزنی کے واقعات کی تحقیقات قومی تحقیقاتی ایجنسی این ، آئی، اے، کے بجائے سی بی آئی سے کرواتی۔ حیدرعلی باغبان نے اس بات پر سخت افسوس کا اظہار کیا ہے کہ موجودہ لوک سبھا انتخابات میں پورے ملک میں مسلمانوں نے نریندر مودی کی نفرت میں کانگریس کو ووٹ دیا اور کانگریس ہے کہ آسام میں مسلمانوںکے قتل عام اور تباہی و بربادی پر خاموش تماشائی بنی ہوئی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT