Thursday , November 23 2017
Home / شہر کی خبریں / آلیر انکاؤنٹر کیخلاف دہلی میں احتجاجی ریالی

آلیر انکاؤنٹر کیخلاف دہلی میں احتجاجی ریالی

سی بی آئی تحقیقات پر زور، این سی ایچ آر او کی پریس کانفرنس

حیدرآباد 25 اکٹوبر (پریس نوٹ) نیشنل کانفیڈریشن آف ہیومن رائٹس آرگنائزیشن کے زیراہتمام ہفتہ کو نئی دہلی میں واقع آندھرا بھون کے روبرو ایک ریالی نکالتے ہوئے آلیر انکاؤنٹر میں پانچ بے قصور مسلم نوجوانوں کے پولیس کے ہاتھوں مبینہ قتل کے خلاف احتجاج کیا اور حکومت سے مطالبہ کیاکہ وہ سی بی آئی کے ذریعہ واقعہ کی تحقیقات کروائے۔ آرگنائزیشن کے اس احتجاج میں مہلوکین کے افراد خاندان بھی شامل تھے۔ احتجاجیوں نے حکومت پر زور دیا کہ وہ مہلوکین کے افراد خاندان اور پسماندگان کو فوری ایکس گریشیاء منظور کریں۔ پولیس کے خلاف  مجرمانہ مقدمات درج کرنے کا بھی مطالبہ کیا گیا کیوں کہ مسلم نوجوانوں کی اموات پولیس حراست میں ہوئی ہیں اس واقعہ میں حراست میں قتل سے تعبیر کیا جائے۔ قبل ازیں مقتولین کے افراد خاندان نے دہلی میں ایڈوکیٹ کے پی محمد شریف وائس چیرپرسن آف آرگنائزیشن کے علاوہ انسانی حقوق تنظیموں اور سیول رائٹس نے پریس کانفرنس سے مخاطب کرتے ہوئے کہاکہ انسانی حقوق تنظیموں کے کارکنوں کے ذریعہ چھ مہینوں تک مرحلہ وار کئے گئے احتجاج سے واقف کروایا اور کہاکہ کس طرح پولیس نے مبینہ طور پر اپنی حراست میں حیدرآباد عدالت کو منتقلی کے دوران پانچ نوجوانوں کو قتل کیا اور کہاکہ 28 اور 29 اپریل 2015 ء کو آرگنائزیشن نے مختلف ریاستوں کے کارکنوں بشمول پروفیسر اے مارکز چیرپرسن آرگنائزیشن کے ذریعہ واقعہ کی تحقیقات کی گئی جس میں پولیس کے مجرمانہ قتل کے واقعہ آشکار ہوا ہے۔ اس واقعہ پر ایک رپورٹ تیار کی گئی جس میں پولیس کی بنائی گئی من گھڑت کہانی سے کئی خامیوں کا اظہار ہوتا ہے۔ انھوں نے مزید بتایا کہ فیاکٹ فائنڈنگ رپورٹ کو ریاست کے اعلیٰ عہدیداروں کے علاوہ مرکزی حکومت بشمول وزیراعظم کو روانہ کرکے خاطی پولیس ملازمین کے خلاف سخت کارروائی پر زور دیا گیا۔

TOPPOPULARRECENT