Monday , September 24 2018
Home / شہر کی خبریں / آندھراپردیش میں نئے دارالحکومت کی تعمیر کیلئے حصول اراضی کا آج سے آغاز

آندھراپردیش میں نئے دارالحکومت کی تعمیر کیلئے حصول اراضی کا آج سے آغاز

لینڈ پولنگ پالیسی کا اعلان، کسانوں کو زبردست فائدوں کی پیشکش، چندرا بابو نائیڈو کا بیان

لینڈ پولنگ پالیسی کا اعلان، کسانوں کو زبردست فائدوں کی پیشکش، چندرا بابو نائیڈو کا بیان
حیدرآباد۔8ڈسمبر ( پی ٹی آئی) حکومت آندھراپردیش نے ضلع گنٹور اور شہر وجئے واڑہ کے درمیان دریائے کرشنا کے جنوب میں دریا رُخ سرسبز و شاداب نیا دارالحکومت تعمیر کرنے کیلئے اراضی جمع ( حاصل) کرنے کیلئے اپنی نئی پالیسی کا آج اعلان کی ہے جس کے تحت اس مقصد کیلئے 30,000 ایکڑ اراضی حاصل کی جائے گی ۔ آندھراپردیش کے چیف منسٹر این چندرا بابو نائیڈو نے اراضی مجتمع کرنے کی نئی پالیسی کا آج دوپہر کرتے ہوئے کہا کہ ’’ دارالحکومت کی تعمیر کیلئے اراضی مجتمع کرنے کے عمل کا کل 9ڈسمبر منگل سے باضابطہ آغاز ہوگا ۔ 20دیہاتوں میں 22,045 کسان اراضیات دینے کیلئے پہلے ہی اپنی آمادگی ظاہر کرچکے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ بیک وقت تصفیہ کے طور پر کسانو کو قرضوں کے بوجھ سے راحت دلانے فی کس 1.5لاکھ روپئے کی ادائیگی کیلئے حکومت کی طرف سے فی الفور 200کروڑ روپئے جاری کئے جارہے ہیں ۔چیف منسٹر نے پریس کانفرنس سے خطاب کے دوران کہا کہ ’’ نئے دارالحکومت کیلئے اپنی اراضیات دینے والے کسانوں کو بے پناہ فوائد حاصل ہوں گے کیونکہ میں وعدہ کررہا ہوں کہ ہرکسی کے ساتھ انصاف کیا جائے گا ۔ سارے ملک میں اراضی کے حصول کا یہ سب سے بہترین پیکیج ثابت ہوگا اور ہم عالمی معیار کا درالحکومت تعمیر کریں گے جس کیلئے حکومت سنگاپور ماسٹر پلان تیار کرے گی ‘‘ ۔ چندرا بابو نائیڈو نے کہا کہ خشک اراضیات کے مالک کسانوں کو ان سے حاصل کی جانے والی فی ایکڑ اراضی پر حکومت آندھراپردیش کی جانب سے 1000گز پر مشتمل رہائشی پلاٹ اور 200مربع گز پر مشتمل تجارتی پلاٹ دیا جائے گا ۔ تری کے زمرہ میں شامل اراضی کے مالکین فی ایکڑ اراضی کے حصول کے معاوضہ کے طور پر 1000مربع گز رہائشی پلاٹ اور 300مربع گز تجارتی پلاٹ دیا جائے گا ۔ علاوہ ازیں خشک اراضی کے مالکین کو فی ایکڑ سالانہ 30,000 روپئے 10سال تک معاوضہ دیاجائے گا اور معاوضہ میں سالانہ 10فیصد کا اضافہ کیا جائے کیا جاتا رہے گا ۔ تری اراضیات کے مالکین کو فی ایکڑ 50,000 روپئے سالانہ کے حساب سے 10سال تک معاوضہ ادا کیا جائے اور اس معاوضہ میں ہر سال 10فیصد کا اضافہ کیا جاتا رہے گا ۔ چندرا بابو نائیڈو نے کہا کہ لینڈ پولنگ پالیسی کے تحت زمین دینے والوں کو حکومت آندھراپردیش کی طرف سے متعدد فوائد دیئے گئے ہیں تاہم اراضی دینے سے انکار کرنے والے مالکین کے ساتھ حکومت قانون کے مطابق نمٹے گی ۔ اس طرح قانون حصول اراضیات کے استعمال کی صورت میں زمین مالکین خسارہ میں رہیں گے ۔ چندرا بابو نائیڈو نے کہا کہ دو ( تقسیم شدہ ریاست کا ) دارالحکومت تعمیر کرتے ہوئے افسوس تو ہورہا ہے لیکن ہم خوش نصیب ہیں کہ ہمیں یہ موقع حاصل ہوا ہے ۔ مجھ پر خدا کی مہربانی ہے اور مجھے یقین ہے کہ اس مقصد کیلئے درکار مالی وسائل بھی میسر ہوجئیں گے ‘‘ ۔ چیف منسٹر نے کہا کہ ان کی حکومت ان تمام خاندانوں کو مفت طبی خدمات اور مفت طبی تعلیم فراہم کرے گی ۔ علاوہ ازیں مہاتما گاندھی قومی دیہی ضمانت روزگار اسکیم کے تحت سال کے 365 دن با اجرت ملازمت فراہم کرے گی ۔عمررسیدہ افراد کو رہائش اور غذا کی فراہمی کیلئے بیت المعمرین اور این ٹی آر کینٹین قائم کی جائیں گی ۔ نوجوانوں کو خود روزگار بنانے کی کس 25لاکھ روپئے کے بلاسودی قرض دیئے جائیں گے ۔

TOPPOPULARRECENT