Sunday , November 19 2017
Home / شہر کی خبریں / آندھراپردیش میں کسانوں کی رضامندی کے بغیر جبراً حصول اراضیات

آندھراپردیش میں کسانوں کی رضامندی کے بغیر جبراً حصول اراضیات

حکومت کے اقدامات کی مخالفت، وی ہنمنت راؤ رکن راجیہ سبھا کانگریس کا ردعمل
حیدرآباد 23 اگسٹ (سیاست نیوز) سینئر کانگریس قائد و رکن پارلیمان مسٹر وی ہنمنت راؤ نے آندھراپردیش حکومت کو ہدف ملامت بناتے ہوئے مخالف عوام بالخصوص مخالف کسان اقدامات کرنے کا الزام عائد کیا اور کہاکہ حکومت نے آندھراپردیش کی راجدھانی بنانے کے لئے کسانوں کی رضامندی کے بغیر زبردستی اراضیات حاصل کرنے اقدامات کررہی ہے۔ آج اخباری نمائندوں سے غیر رسمی بات چیت کرتے ہوئے مسٹر وی ہنمنت راؤ نے حکومت آندھراپردیش کے مخالف کسان اقدامات کی سخت مذمت کی اور کہاکہ راجدھانی کے نام پر حکومت آندھراپردیش زبردستی اراضیات حاصل کرتے ہوئے ظالمانہ اقدامات کررہی ہے جس کی وجہ سے غریب کسان جن کا انحصار زندگی صرف اور صرف اراضیات پر کاشت کرنے سے ہی ممکن ہے۔ رکن پارلیمان نے آندھراپردیش میں راجدھانی (دارالحکومت) کی تعمیر کے لئے حصول اراضیات کی وجہ سے اراضیات سے محروم ہونے والے کسانوں کی بھرپور تائید کرنے مسٹر پون کلیان کے اعلان پر اپنی مسرت کا اظہار کیا اور اس کو ایک خوش آئند اقدام سے تعبیر کیا۔ مسٹر وی ہنمنت راؤ نے آندھراپردیش کو خصوصی موقف دینے کا مرکزی حکومت سے پرزور مطالبہ کیا اور کہاکہ ریاست آندھراپردیش کی تقسیم کے موقع پر ریاست آندھراپردیش کو خصوصی موقف دینے کا تیقن دیا گیا تھا لیکن اس وقت بعض ناگزیر وجوہات کی وجہ سے خصوصی موقف فراہم نہیں کیا جاسکا لہذا اب موجودہ مرکزی حکومت کی ذمہ داری ہے کہ وہ آندھراپردیش کو خصوصی موقف عطا کرے۔ سینئر قائد کانگریس پارٹی و رکن پارلیمان نے پراناہیتا ۔ چیوڑلہ پراجکٹ کو قومی پراجکٹ قرار دینے کا مرکزی حکومت سے پرزور مطالبہ کیا۔ علاوہ ازیں ریاست میں ڈینگو بخار سے متاثرہ افراد کی تعداد میں اضافہ پر تشویش کا اظہار کیا اور ڈینگو پر فوری طور پر قابو پانے کے لئے خصوصی توجہ دینے کا حکومت تلنگانہ سے مطالبہ کیا۔

TOPPOPULARRECENT