Saturday , December 16 2017
Home / Top Stories / اپوزیشن کو بے نقاب کرنے وزراء کو مودی کی ہدایت

اپوزیشن کو بے نقاب کرنے وزراء کو مودی کی ہدایت

گورکھا جن مکتی مورچہ کے وفد کی وزیراعظم سے ملاقات، گورکھا لینڈ مطالبہ پر تبادلہ خیال
نئی دہلی 16 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) این ڈی اے وزراء پورے ملک میں جنوری سے پھیل جائیں گے تاکہ اپوزیشن کے پارلیمنٹ کی کارروائی کو مفلوج کرنے کی کارستانیوں کو بے نقاب کرسکیں کیوں کہ ان کی وجہ سے کئی اہم مسودات قانون منظور نہیں کئے جاسکے۔ مرکزی وزراء حکومت کے کارنامے بھی اُجاگر کریں گے اور انھیں ’’غریب حامی‘‘ ظاہر کریں گے۔ مجلس وزراء کے اپنی قیامگاہ پر ایک اجلاس میں وزیراعظم نریندر مودی نے اُن سے خواہش کی کہ خود کو حکومت کے کارناموں کے بارے میں بلند حوصلہ محسوس کریں۔ حکومت جو کچھ کررہی ہے، وہ سب کچھ اپوزیشن کی تنقید کی وجہ سے ضائع ہورہا ہے جس میں مبینہ طور پر ’’جھوٹ کی مہم‘‘ چلا رکھی ہے۔ اجلاس دیڑھ گھنٹہ جاری رہا جس میں وزیراعظم نے اپنے کابینی وزراء کو ہدایت دی کہ چیلنج کا سامنا کریں اور حکومت کی کارکردگی کے بارے میں عوام کو واقف کروائیں اور اُن سے بہتر رابطہ پیدا کریں۔ ایک تفصیلی منصوبہ بعدازاں تیار کیا جائے گا لیکن وزراء سے خواہش کی گئی ہے کہ وہ اپنے اپنے انتخابی حلقوں کا جنوری کے دوسرے ہفتہ سے دورہ کریں اور اِن علاقوں میں جو اُن کے سپرد کئے گئے ہیں، کم از کم 30 گھنٹے گزاریں۔ وزراء کو وقفہ وقفہ سے اپنے محکموں کی کارکردگی کا جائزہ لینے کی بھی ہدایت دی گئی۔

وزیراعظم نے اختراعی نظریات پیش کرنے پر زور دیا تاکہ کارکردگی کے مظاہرہ میں بہتری آسکے اور حکومت کی شبیہہ بہتر بن سکے۔ مودی کا خیال تھا کہ کوشش کی جانی چاہئے تاکہ عوام کی زیادہ سے زیادہ شراکت داری مرکزی حکومت کی اسکیموں کے لئے بجٹ کی تیاری میں ہوسکے اور لمحہ آخر رقم خرچ کرنے کے لئے عجلت نہ کی جائے۔ یہ بھی فیصلہ کیا گیا کہ ہر وزیر دو پارلیمانی حلقوں کا دورہ کرکے عوام کو مودی حکومت کے فیصلوں سے واقف کروائے گا جو عام آدمی کے حق میں ہیں۔ دریں اثناء جن مکتی مورچہ کے ایک وفد نے آج وزیراعظم نریندر مودی سے ملاقات کی اور خواہش کی کہ ایک کمیٹی قائم کی جائے جو علیحدہ ریاست گورکھا لینڈ تشکیل دینے کے مطالبہ کا جائزہ لے۔ وفد کی قیادت بی جے پی کے رکن پارلیمنٹ برائے دارجلنگ ایس ایس اہلووالیہ کررہے تھے، وفد نے اپنے مطالبات کے مختلف پہلوؤں پر تبادلہ خیال کیا اور اُن سے درخواست کی کہ ہمدردانہ غور کریں۔ وزیراعظم کے دفتر سے جاری کردہ ایک بیان کے بموجب وفد نے کہاکہ جی جے ایم کے ارکان جن کا بی جے پی سے اتحاد ہے، نے وزیراعظم کہاکہ علیحدہ ریاست گورکھا لینڈ کا مطالبہ بی جے پی کے انتخابی منشور میں بھی گزشتہ سال لوک سبھا انتخابات کے دوران شامل تھا، وزیراعظم نے وفد سے کہاکہ بی جے پی واحد پارٹی ہے جو گورکھو کے فلاح و بہبود کے بارے میں سوچتی ہے۔ وفد کے ارکان نے کہاکہ وہ پُرامید ہیں۔

TOPPOPULARRECENT