Wednesday , January 24 2018
Home / شہر کی خبریں / اچانک بارش سے کھڑی فصلوں اور اناج کے ذخائر کو نقصان، کسانوں کے آنسو نکل پڑے

اچانک بارش سے کھڑی فصلوں اور اناج کے ذخائر کو نقصان، کسانوں کے آنسو نکل پڑے

٭ دونوں شہروں میں بھی 13.4 ملی میٹر بارش ریکارڈ ٭ سڑکوں پر پانی جمع ٭ ٹریفک میں خلل ، ہورڈنگس ، برقی اور ٹیلیفون پولس گر پڑے ٭ کئی علاقوں میں برقی سربراہی منقطع ٭ بحر عرب میں ہوا کے دباؤ میں کمی کے باعث موسم تبدیل ٭ گرمی سے عوام کو راحت

٭ دونوں شہروں میں بھی 13.4 ملی میٹر بارش ریکارڈ ٭ سڑکوں پر پانی جمع ٭ ٹریفک میں خلل ، ہورڈنگس ، برقی اور ٹیلیفون پولس گر پڑے ٭ کئی علاقوں میں برقی سربراہی منقطع ٭ بحر عرب میں ہوا کے دباؤ میں کمی کے باعث موسم تبدیل ٭ گرمی سے عوام کو راحت

حیدرآباد۔/9مئی، (سیاست نیوز ) غیر موسمی بارش کسانوں پر قہر بن کر نازل ہوگئی۔ کل شام سے شروع ہونے والی موسلا دھار بارش نے ایک طرف کسانوں کو زبردست نقصانات سے دوچار کردیا تو دوسری طرف کھڑی فصلوں پر بارش کی مار اور کھلے آسمان تلے رکھا گیا اناج بھیگ جانے سے کسانوں کی آنکھ سے آنسو نکل پڑے۔ اضلاع کریم نگر، ورنگل، نظام آباد، نلگنڈہ، محبوب نگر میں ہزار ہا کنٹل اناج بھیگ کر خراب ہوگیا۔ جبکہ مارکٹ یارڈ میں فروخت کیلئے لایا گیا اناج بارش میں بھیگ جانے سے کسانوں میں تشویش کی لہر دوڑ گئی۔ ضلع کریم نگر کے مٹ پلی مارکٹ یارڈ میں تقریباً 5ہزار کنٹل غذائی اجناس بھیگ گئے۔ مارکٹ یارڈ میں پلیٹ فارم ( چبوترے ) صحیح ڈھنگ سے تعمیر نہ ہونے کے باعث بارش کا پانی اناج کے ذخیروں کے پاس ہی جمع ہوگیا۔ سلطان آباد ( ضلع کریم نگر ) میں زرعی مارکٹ میں تقریباً 3 ہزار کنٹل اناج بھیگ کر خراب ہوگیا جس کی وجہ سے یہ اناج ناقابل فروخت ہوگیا۔ لاکھوں روپئے مالیتی اناج کی تباہی سے کسان مالی مشکلات کا شکار ہوگئے ہیں۔ نلگنڈہ مستقر پر واقع مارکٹ یارڈ میں کسانوں سے خرید کر رکھا گیا4ہزار کنٹل اناج بھیگ گیا جو کہ دوسرے مقام پر منتقل کرنے کیلئے تیار رکھا گیا تھا۔ نظام آباد مارکٹ یارڈ میں بھی ہزار ہا اناج کے بستے بھیگ گئے ہیں جبکہ نوی پیٹ منڈل میں تقریباً300 ایکڑ اراضی پر دھان کی فصل کو نقصان پہنچا ہے۔ ضلع عادل آباد کے لکشمی چاندہ منڈل میں غیر موسمی بارش سے ہلدی کے کسانوں کو نقصان پہنچا ہے۔ متاثرہ کسانوں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ ہلدی کے نقصانات کی پابجائی کی جائے۔ ضلع کھمم میں بھی کئی مقامات پر مسلسل بارش سے مرچ، مکئی اور دھان کی فصل تباہ ہوگئی۔ کھمم مارکٹ یارڈ میں کپاس، مونگ پھلی، جوار کے ذخائیر کو نقصان پہنچا ہے جہاں پر صبح میں اناج کی خریدی شروع کی گئی تھی لیکن شام میں اچانک بارش سے اناج کے ذخیرے متاثر ہونے پر کسانوں نے ٹھنڈی آہیں بھریں۔اسی دوران دونوں شہروں حیدرآباد اور سکندرآباد میں بھی زبردست بارش ریکارڈ ہوئی ۔ پرانے شہر میں کئی مقامات پر پانی مکانوں میں گھس گیا ۔ پیراڈائز ، تارناکہ اور دیگر مقامات پر ٹریفک جام رہی ۔ آج صبح کی اولین ساعتوں میں سکندرآباد ، حمایت نگر ، کوٹھی ، سلطان بازار ، رامنتا پور ، اُپل ، عنبرپیٹ ، خیریت آباد ، پنجہ گٹہ ، عابڈس ، لکڑی کا پل اور دیگر مقامات پر بھی بارش سے سڑکوں پر پانی جمع ہوگیا ، ٹریفک میں خلل پڑا ۔ محکمہ موسمیات نے بتایا کہ شہر میں 13.4 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی ہے ۔ سب سے زیادہ ملکاپور علاقہ میں 23.50 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی ۔ عہدیداروں کے مطابق 11 مئی کو بھی موصلادھار بارش ہوگی ۔ تلنگانہ کے تمام اضلاع کے علاوہ سیما آندھرا کے بعض مقامات پر بارش کا امکان ہے ۔ محکمہ موسمیات کے سائنسداں نرسمہا راؤ نے بتایا کہ بحر عرب میں ہوا کے دباؤ میں کمی کے باعث موسم میں تبدیلی آئی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT