Monday , November 20 2017
Home / ہندوستان / اچھے دن کے وعدہ سے مایوس عوام بُرے دن کی واپسی کے خواہشمند

اچھے دن کے وعدہ سے مایوس عوام بُرے دن کی واپسی کے خواہشمند

افراط ِ زر میں کمی کا دعویٰ ہندسوں کی اُلٹ پھیر،راجیہ سبھا میں مہنگائی پر بحث کے دوران اپوزیشن کا تیکھا طنز
نئی دہلی 27 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) راجیہ سبھا میں آج اپوزیشن جماعتیں قیمتوں میں اضافہ کے مسئلہ پر حکومت کو تنقید کا نشانہ بنانے کے لئے متحد ہوگئیں۔ ایوان میں مختصر مباحث کا آغاز کرتے ہوئے ترنمول کانگریس لیڈر ڈیرک اوبرین نے کہاکہ ہندوستان میں گوشت کھانے والوں سے زیادہ ترکاری کھانے والوں کی حالت بدتر ہے۔ کیوں کہ گوشت اور مچھلی کی قیمت کنٹرول میں ہے لیکن ترکاری اور دالوں کی قیمت آسمان کو چھونے لگی ہیں۔ انھوں نے کہاکہ این ڈی اے ’’اچھے دن‘‘ کا خواب بتاکر اقتدار میں آئی ہے لیکن عوام کی اکثریت کے بُرے سے بُرے (خراب) دن چل رہے ہیں۔ وزیراعظم نریندر مودی کا نام لئے بغیر انھوں نے کہاکہ مغربی ریاست کے ایک چیف منسٹر نے ٹیوٹر پر یو پی اے کے دور حکومت میں قیمتوں کا تذکرہ کیا اور یہ اُمید ظاہر کی کہ ملک کا حکمراں مہنگائی پر قابو پانے کے لئے توجہ مرکوز کرے گا۔ ٹی ایم سی لیڈر نے یہ نشاندہی کی کہ عوام کو افراط زر کے سرکاری اعداد و شمار سے کوئی سروکار نہیں ہے۔ جس میں حکومت نے بلند بانگ دعوے کئے ہیں۔ عوام صرف مہنگائی پر کنٹرول کے خواہشمند ہیں۔ انھوں نے ملک گیر سطح پر 30 سبزی منڈیوں میں قیمتوں کی فہرست پیش کرتے ہوئے مہنگائی کے لئے حکومت کو مورد الزام ٹھہرایا۔

انھوں نے بتایا کہ یہ این ڈی اے کی خوش قسمتی ہے کہ وہ ایسے وقت اقتدار میں آئی جب بین الاقوامی مارکٹ میں خام تیل کی قیمتوں میں زبردست گراوٹ آگئی لیکن بدقسمتی یہ ہے کہ اس کے فوائد عوام کو حاصل نہیں ہوسکے۔ کانگریس لیڈر محترمہ نجنی پائل نے اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں اضافہ پر حکومت کو تنقید کا نشانہ بنایا اور مودی حکومت کو نعرہ بازی کی حکومت سے تعبیر کیا۔ انھوں نے بتایا کہ 2 سال قبل مودی حکومت کے جائزہ حاصل کرنے کے بعد سے راجیہ سبھا میں آج چوتھی مرتبہ مہنگائی کے مسئلہ پر بحث کی جارہی ہے۔ انھوں نے کہاکہ عوام اچھے دن کے وعدہ سے مایوس ہوکر بُرے دن کی طرف لوٹنا چاہتے ہیں۔ تاہم بی جے پی رکن پربھات جھا نے حکومت کی مدافعت کرتے ہوئے یہ ادعا کیاکہ اپوزیشن کے الزامات میں تضاد پایا جاتا ہے جبکہ یو پی اے کے 10 سالہ دور حکومت سے ہی قیمتیں بڑھنے لگی ہیں۔ اس خصوص میں اعداد و شمار پیش کرتے ہوئے مسٹر جھا نے کہاکہ مودی حکومت نے قیمتوں کو گھٹانے کے لئے متعدد اقدامات کئے ہیں۔ سماج وادی پارٹی کے نریش اگروال نے طنزیہ انداز میں کہاکہ جو بات وزیر فینانس سے سننا چاہتے تھے وہ پربھات جھا نے سنادیا ہے۔ اُنھوں نے لوک جن شکتی پارٹی لیڈر رام ولاس پاسوان کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کہاکہ اگرچیکہ مرکزی وزیر دلتوں اور غریبوں کے حق میں اپنی سیاست کے لئے یاد رکھے جاتے ہیں لیکن اپنی سرمایہ دارانہ ذہنیت کی وجہ سے وہ قیمتوں میں اضافہ پر کوئی جواب نہیں دیں گے۔

TOPPOPULARRECENT