Sunday , January 21 2018
Home / Top Stories / اڈوانی بالآخر گاندھی نگر سے مقابلہ پر آمادہ

اڈوانی بالآخر گاندھی نگر سے مقابلہ پر آمادہ

نئی دہلی۔ 20 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) بی جے پی میں آج دن بھر زبردست سیاسی داؤ پیچ دیکھے گئے اور آخرکار سینئر لیڈر ایل کے اڈوانی گاندھی نگر (گجرات) سے مقابلہ کا فیصلہ کرلیا ہے۔ پارٹی ہائی کمان نے اڈوانی کے دباؤ کے آگے یہ موقف اختیار کیا تھا کہ وہ اپنی پسند کا حلقہ منتخب کرسکتے ہیں۔ 86 سالہ لیڈر گاندھی نگر سے مقابلے کا اعلان اُس وقت کیا جبکہ پا

نئی دہلی۔ 20 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) بی جے پی میں آج دن بھر زبردست سیاسی داؤ پیچ دیکھے گئے اور آخرکار سینئر لیڈر ایل کے اڈوانی گاندھی نگر (گجرات) سے مقابلہ کا فیصلہ کرلیا ہے۔ پارٹی ہائی کمان نے اڈوانی کے دباؤ کے آگے یہ موقف اختیار کیا تھا کہ وہ اپنی پسند کا حلقہ منتخب کرسکتے ہیں۔ 86 سالہ لیڈر گاندھی نگر سے مقابلے کا اعلان اُس وقت کیا جبکہ پارٹی صدر راج ناتھ سنگھ نے ایک بیان جاری کرتے ہوئے یہ کہا تھا کہ گاندھی نگر یا بھوپال سے مقابلہ کا فیصلہ اڈوانی خود کریں گے۔ اڈوانی نے چوبیس گھنٹوں سے جاری ڈرامہ ختم کرنے کی خواہش کی

جس میں نریندر مودی اور ان کے مابین جاری کشیدگی بے نقاب ہوچکی ہے۔ اڈوانی نے چہارشنبہ کو ہی انہیں گاندھی نگر سے امیدوار نامزد کرنے پارٹی کے فیصلے پر ناراضگی کا اظہار کیا تھا۔ وہ بھوپال سے مقابلہ کے خواہاں تھے۔ انہوں نے بتایا کہ آج نریندر مودی نے ان سے ملاقات کی اور کہا کہ گجرات کے عوام یہ چاہتے ہیں کہ ایک بار پھر وہ (اڈوانی) گاندھی نگر لوک سبھا حلقہ کی نمائندگی کریں۔ اس دوران بی جے پی لیڈر جسونت سنگھ لوک سبھا حلقہ بارمر سے انہیں امیدوار نہ بنانے پر ناراض ہیں۔ ذرائع نے بتایا کہ جسونت سنگھ نے پارٹی صدر راج ناتھ سنگھ سے اپنی ناراضگی کا اظہار کیا اور یہ خواہش ظاہر کی کہ وہ بارمر سے آخری مرتبہ مقابلہ کے خواہاں ہے۔ یہ اشارے مل رہے ہیں کہ چیف منسٹر راجستھان وسندھرا راجے سندھیا اس حلقہ سے جاٹ لیڈر کرنل سونا رام کو امیدوار بنانے کی خواہاں ہیں جنہوں نے حال ہی میں کانگریس چھوڑ کر بی جے پی میں شمولیت اختیار کی تھی۔

اڈوانی کو مودی پر بھروسہ نہیں ، ملک کیسے بھروسہ کرے: کانگریس
نئی دہلی۔ 20 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) کانگریس نے آج بی جے پی قائدین میں اعتماد کے فقدان کا دعویٰ کیا اور کہا کہ سینئر لیڈر ایل کے اڈوانی کو نریندر مودی پر بھروسہ نہیں۔ ایسے میں ملک مودی پر بھروسہ کیسے کرسکتا ہے۔ کانگریس ترجمان ابھیشیک سنگھوی نے پریس کانفرنس میں کہا کہ چوبیس گھنٹوں کے اندر ملک نے بی جے پی کا حقیقی چہرہ دیکھ لیا۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس کو بی جے پی کے داخلی معاملات میں دلچسپی نہیں لیکن یہ مسئلہ اعتماد کے فقدان کا ہے چنانچہ ہم یہ پوچھنا چاہتے ہیں کہ مودی پر جب اڈوانی بھروسہ نہیں کرتے تو ملک کے عوام کیسے بھروسہ کریں۔

TOPPOPULARRECENT