Thursday , November 23 2017
Home / Top Stories / اڈیشہ کے قبائیلی کے ساتھ جذبہ ہمدردی

اڈیشہ کے قبائیلی کے ساتھ جذبہ ہمدردی

وزیر اعظم بحرین اور دیگر اداروں کی جانب سے 15لاکھ کی امداد

بھوبانیشور۔/16ستمبر، ( سیاست ڈاٹ کام ) اڈیشہ کا ایک غریب قبائیلی دانا ماجھی جس نے اپنی بیوی کی نعش کاندھوں پر اٹھاکر 10کلو میٹر کا سفر طئے کرتے ہوئے عام و خواص کی ہمدردی حاصل کرلی اب وہ مالی امداد اور بشمول وزیر اعظم بحرین کے گرانقدر عطیہ کی بدولت لکھ پتی بن گیا۔ضلع کالا ہانڈی میں دور افتادہ گاؤں میلاتھی کے متوطن ماجھی نے زندگی میں کبھی ایک لاکھ روپئے نہیں دیکھا تھا گوکہ ایک المناک واقعہ کے بعد لاکھوں روپئے کی دولت اس کے ہاتھ آگئی، لیکن غربت کی وجہ سے اپنی شریک حیات سے محروم ہونا پڑا۔ بیوی کی نعش کو اٹھاکر جانے کے دلخراش منظر پر میڈیا میں ماجھی کو شہرت حاصل ہوگئی اور لوگوں نے جذبہ ہمدردی کا مظاہرہ کرتے ہوئے مالی امداد کا سلسلہ شروع کردیا حتیٰ کہ اس کی 3 بیٹیوں کو کالنگا انسٹی ٹیوٹ آف سوشیل سائنس میں مفت تعلیم اور رہائش فراہم کی جارہی ہے۔ دریں اثناء وزیر اعظم بحرین خلیفہ بن سلمان بن الخلیفہ نے گرانقدر عطیہ 8.87لاکھ روپئے روانہ کئے ہیں اور رقم کا چیک کل بحرین کے سفارتخانہ میں ماجھی کے حوالے کیا گیا۔بعد ازاں اس نے بتایا کہ یہ رقم اپنی بیٹیوں کے نام بینک میں ڈپازٹ کروادیا۔ قبل ازیں سلابھ انٹر نیشنل نے 5لاکھ روپئے امداد کے ساتھ ہر ماہ 10ہزار روپئے لڑکیوں کی تعلیم کیلئے ادا کرنے کا وعدہ کیا ہے۔ واضح رہے کہ 24اگسٹ کو ایک سرکاری ہاسپٹل میں دانا ماجھی کی بیوی کا انتقال ہوگیا تھا اس کے پاس رقم نہ ہونے پر انتظامیہ نے ایمبولنس فراہم کرنے سے انکار کردیا تھا، جس کے بعد بحالت مجبوری وہ اپنی بیوی کی نعش کاندھے پر اٹھاکر 10کلو میٹر کا فاصلہ طئے کیا تھا، اور اس دلخراش منظر کو میڈیا میں تشہیر کے بعد عوام میں غم و غصہ کی لہر پیدا ہوگئی تھی جس پر حکومت نے خواب غفلت سے بیدار ہوکر اس واقعہ کی تحقیقات کا حکم دیا تھا جبکہ ضلع انتظامیہ نے آخری رسومات ادا کرنے کیلئے ایک رضاکارانہ تنظیم کو مالی امداد کی تھی۔تاہم اس واقعہ کے بعد سرکاری ہاسپٹلوں کی زبوں حالی میں کوئی تبدیلی نہیں ہوئی۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT