Sunday , December 17 2017
Home / Top Stories / ایران اشتعال انگیزی سے باز آجائے ، عرب اتحاد پر زور

ایران اشتعال انگیزی سے باز آجائے ، عرب اتحاد پر زور

سعودی عرب کی حمایت کیلئے قاہرہ میں عرب وزرائے خارجہ اور سفارتکاروں کا اجلاس
قاہرہ ۔ /10 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) عرب وزرائے خارجہ کا آج یہاں اجلاس منعقد ہوا جس میں سعودی عرب کی بھرپور حمایت کرتے ہوئے ایران کے خلاف عرب اتحاد کی ضرورت پر زور دیا۔ ایران کے ساتھ سعودی عرب کے تعلقات منقطع ہوجانے کے ایک ہفتہ بعد سفارتی بحران بڑھ رہا ہے اس سے مشرقی وسطیٰ تصادم مزید خطرناک ہونے کا اندیشہ پیدا ہورہا ہے ۔ ایران نے اس دوران سعودی عرب پر الزام عائد کیا ہے کہ وہ شام کی خانہ جنگی اور تنازعہ کو حل کرنے کی کوششوں میں رخنہ ڈال رہے ہیں جبکہ سعودی عرب اور ایران کے درمیان کشیدگی میں زبردست اضافہ دیکھا گیا ۔ قاہرہ میں عرب لیگ وزرائے خارجہ اور سربراہان سفارتکاروں کے اجلاس کا افتتاح کرتے ہوئے اس گروپ کے سربراہ نبیل العربی نے تہران پر الزام عائد کیا کہ وہ ’’اشتعال انگیز ‘‘ حرکتیں کررہا ہے ۔ انہوں نے عرب اتحاد کے لئے زور دیا ۔ انہوں نے وزرائے خارجہ پر زور دیا کہ ایران کے خلاف مضبوط اور واضح مشترکہ موقف اختیار کریں ۔ عرب وزرائے خارجہ نے سعودی عرب کی خواہش پر ہنگامی بات چیت کے لئے جمع ہوکر صورتحال پر غور و خوص کیا ۔

عرب لیگ سربراہ نے ایران پر بھی زور دیا کہ وہ عرب ملکوں کے امور میں ہر طرح کی مداخلت کو ختم کردے ۔ سعودی عرب کے وزیر خارجہ محمد بن ال زبیر نے سعودی عرب کو للکار نے والے ایران کے بیانات کی مذمت کی اور کہا کہ سعودی سفارتخانوں پر راست حملوں کی وجہ سے ہی ریاض کو تلعقات منقطع کرلینے پڑے ۔ یہ تنازعہ اس وقت پیدا ہوا جب /2 جنوری کو سعودی عرب نے ممتاز شیعہ عالم دین نمر ال نمر کو دیگر 46 افراد کے ہمراہ دہشت گردی کے الزامات پر سزائے موت دی تھی ۔ اس سزاء کے بعد ایران کے بشمول کئی دیگر ملکوں میں مخالف سعودی مظاہرے ہوئے جہاں مظاہرین نے تہران میں سعودی سفارتخانہ کو آگ لگادی اور مشہد میں اس کے قونصل خانہ پر حملہ کیا ۔ سعودی عرب نے دوسرے ہی دن ایران کے ساتھ اپنے سفارتی تعلقات منقطع کرلیئے ۔ اس کے بعد سعودی عرب کے کئی حلیف ملکوں نے بھی تہران سے اپنے سفیروں کو واپس طلب کرلیا ۔ اس تنازعہ میں مزید اس وقت شدت پیدا ہوئی جب جمعرات کو ایران نے کہا کہ سعودی جنگی طیاروں نے یمن میں اس کے سفارتخانہ پر بم حملے کئے ہیں ۔ اس کے عملہ کے ارکان زخمی ہوئے ۔ ایران نے اس حملے کے خلاف اقوام متحدہ سلامتی کونسل میں احتجاج درج کرنے کا اعلان کیا ۔

سعودی عرب پر شام امن مذاکرات کو نقصان پہونچانے کا الزام
تہران ۔ /10 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) ایران کے وزیر خارجہ محمد جواد ظریف نے آج سعودی عرب پر الزام عائد کیا کہ وہ تہران تنازعہ کے بہانے شام میں امن مساعی اور امن مذاکرات کو نقصان پہونچانے کی کوشش کررہا ہے ۔ وزارت خارجہ ایران کے بیان میں بتایا گیا ہے کہ ظریف نے کہا کہ سعودی عرب کے رویہ سے شام بحران کو دور کرنے میں مدد نہیں ملے گی بلکہ اس بحران میں مزید اضافہ ہوگا ۔ ہم سعودی عرب کو ایسی کوئی حرکت کرنے نہیں دیں گے ۔ جس سے منفی اثرات مرتب ہوں ۔

TOPPOPULARRECENT