Thursday , September 20 2018
Home / دنیا / ایران نیوکلیر معاہدہ پر اوباما کی سنیٹرس سے ٹیلیفون پر بات چیت

ایران نیوکلیر معاہدہ پر اوباما کی سنیٹرس سے ٹیلیفون پر بات چیت

واشنگٹن 9 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) امریکی صدر بارک اوباما نے سنیٹ فارین ریلیشنز کے صدرنشین اور اعلیٰ سطحی ڈیموکریٹک سے رابطہ قائم کیا تاکہ ایران کو نیوکلیر پروگرام سے باز رکھنے کے لئے جس معاہدہ کا فریم ورک تیار کیا گیا ہے، اُس موضوع پر مزید تبادلہ خیال کیا جاسکے۔ صدرنشین باب کارکر، جو ریپبلکن ہیں اور بین کارڈین جو ڈیموکریٹ ہیں، ایسی ق

واشنگٹن 9 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) امریکی صدر بارک اوباما نے سنیٹ فارین ریلیشنز کے صدرنشین اور اعلیٰ سطحی ڈیموکریٹک سے رابطہ قائم کیا تاکہ ایران کو نیوکلیر پروگرام سے باز رکھنے کے لئے جس معاہدہ کا فریم ورک تیار کیا گیا ہے، اُس موضوع پر مزید تبادلہ خیال کیا جاسکے۔ صدرنشین باب کارکر، جو ریپبلکن ہیں اور بین کارڈین جو ڈیموکریٹ ہیں، ایسی قانون سازی پر غور و خوض کررہے ہیں جس کے تحت کانگریس کو یہ اختیار حاصل ہوسکتا ہے کہ امریکہ اور اس کے حلیفوں کے ذریعہ آنے والے دنوں میں ایران کے نیوکلیر پروگرام سے متعلق کسی بھی معاہدہ کے اطلاق پر اپنی رائے پیش کرسکے۔ کمیٹی منگل کے روز اس بل پر اپنا ووٹ دے گی جبکہ اوباما نے اس بل کی مخالفت کی ہے اور کہا ہے کہ وہ اس کو ویٹو کردیں گے۔

دوسری طرف صدر کے ترجمان جوش ارنیسٹ نے بتایا کہ مسٹر کارکر نے کل صدر موصوف سے ایران کے نیوکلیر پروگرام سے متعلق بات کی جہاں ایران نے اپنے پروگرام کو محدود رکھنے کے لئے اپنے وعدہ کی پابندی کی طمانیت دی ہے۔ مسٹر ارنیٹ نے کہاکہ اس سلسلہ میں کارکر نے جو بھی کارکردگی دکھائی ہے۔ اوباما نے اُس کی ستائش کی ہے اور یہ توقع ظاہر کی کہ چند دنوں میں کیا جانے والا معاہدہ ایران کو نیوکلیر ہتھیاروں کے حصول سے دور رکھنے کا بہترین ذریعہ ثابت ہوگا۔ عارضی معاہدہ کی تکمیل 30 جون تک ہوجائے گی۔ کارکر کے دفتر نے صدر اوباما کے کال کی توثیق کی تاہم تفصیلات بتانے سے انکار کردیا۔ البتہ کارڈین نے صرف اتنا کہاکہ انھوں نے 15 منٹ تک ٹیلیفون پر صدر اوباما سے بات چیت کی۔

TOPPOPULARRECENT