Sunday , November 19 2017
Home / Top Stories / ایران کیساتھ سمجھوتہ برقرار رکھنے ٹرمپ کا فیصلہ

ایران کیساتھ سمجھوتہ برقرار رکھنے ٹرمپ کا فیصلہ

تہران شرائط کی پابندی کررہا ہے، نئی تحدیدات عائد نہیں کی جائینگی
واشنگٹن ۔ 18 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) مریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے اپنی انتخابی مہم کے دوران کیے گئے ایک اہم ترین وعدے سے پیچھے ہٹتے ہوئے ایران کے ساتھ نیوکلیئر معاہدہ باقی رکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔ تاہم ساتھ ہی انہوں نے دھمکی بھی دی ہے کہ ایران پر پابندیاں عائد کرنے کا تعلق اس کے نیوکلیئر پروگرام سے نہیں بلکہ دیگر دو عسکری پروگراموں سے ہے۔ ان میں ایک بیلسٹک میزائل اور دوسرا تیز رفتار سمندری کشتیوں سے متعلق ہے۔اس بات کا اعلان پیر کی شب ایک امریکی عہدیدار نے کیا۔ واضح رہے کہ ٹرمپ نے صدارتی انتخابات کی مہم کے دوران وعدہ کیا تھا کہ وہ اس نیوکلیئر معاہدے کو ختم کر دیں گے جو دو سال قبل بڑے ممالک اور تہران کے درمیان طے پایا تھا۔عہدیدار نے نام ظاہر نہ کرنے کے مطالبے پر بتایا کہ ٹرمپ انتظامیہ کے نزدیک تہران 14 جولائی 2015 کو سابق صدر باراک اوباما کی انتظامیہ کے ساتھ طے پائے جانے والے نیوکلیئر معاہدے کے متن کی “شرائط کی پاسداری” کر رہا ہے۔ اس کا مطلب یہ ہوا کہ ایران پر اس کے نیوکلیئر پروگرام کے سبب کوئی پابندی عائد نہیں کی جائے گی۔

 

TOPPOPULARRECENT