Friday , September 21 2018
Home / Top Stories / ایران کی سلامتی کونسل قرارداد کی خلاف ورزی کرنے کے ٹھوس ثبوت موجود : نکی ہیلی

ایران کی سلامتی کونسل قرارداد کی خلاف ورزی کرنے کے ٹھوس ثبوت موجود : نکی ہیلی

ایران یمن میں بھی باغیوں کو میزائل فراہم کرتے
ہوئے آگ کو ہوا دے رہا ہے
ایرانی مشن کی جانب سے ’’من گھڑت‘‘ کہتے
ہوئے الزامات کی تردید

واشنگٹن ۔ 15 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) اقوام متحدہ کیلئے امریکی سفیر نکی ہیلی نے آج ایک اہم بیان دیتے ہوئے کہا کہ اس بات کے واضح ثبوت موجود ہیں کہ ایران اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل قرارداد برائے ہتھیاروں کی افزودگی معاملہ کی خلاف ورزی کررہا ہے۔ نکی ہیلی نے جوائنٹ بیس اناکوسٹی بالنگ میں کار کی سائز کے ایک جلے ہوئے بالسٹک میزائل کے روبرو ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ایران کی خلاف ورزی ہماری جنگ پوری دنیا کی جنگ ہے اور ایران کو ختم کرنے کے لئے امریکہ شفافیت اور بین الاقوامی تعاون پر کچھ اس طرح عمل کررہا ہے جس کی اس وقت شدید ضرورت ہے۔ انہوں نے ایک بار پھر اپنی بات دہراتے ہوئے کہا کہ سلامتی کونسل قرارداد کی خلاف ورزی کرنے ایران کے خلاف ٹھوس شواہد موجود ہیں اور تازہ ترین دریافت کے بارے میں اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل کی قرارداد 2231 امپلمنٹیشن رپورٹ میں تذکرہ کیا گیا ہے۔ دریں اثناء اپنی بات جاری رکھتے ہوئے انہوں نے ایران پر یمن کے حوثی باغیوں کو میزائل مہیا کرانے کا الزام لگاتے ہوئے کہا کہ یہ اقوام متحدہ کی قراردادوں کی بھی خلاف ورزی کر رہا ہے۔ اقوام متحدہ میں امریکی نمائندہ نکی ہیلی نے صحافیوں کو گزشتہ ماہ ریاض ایئر پورٹ کے پاس ایک بیلسٹک میزائل کے باقیات کو دکھایا۔انہوں نے کہا اس پر’’میڈ ان ایران کے اسٹیکر بھی ہو سکتے تھے ‘‘۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ ایران اقوام متحدہ کی قراردادوں کی خلاف ورزی کر رہا ہے ۔ایران اگرچہ حوثی باغیوں کو ہتھیار دینے سے انکار کرتا رہا ہے ۔اس کے مطابق یہ دعوے غیر ذمہ دارانہ، اشتعال انگیز اور تباہ کن رجحان والے ہیں۔حوثی باغی 2015 سے ہی یمنی حکومت کی حمایت کرنے والی سعودی عرب کی قیادت والی اتحادی افواج سے جدوجہد کر رہے ہیں لیکن نکی ہیلی نے کہا کہ تمام تکنیکی باریکیاں مثلا پنکھوں پر سٹیبلائزر کا نہ ہونا اور کناروں پر کئی والو ولگے ہونے سے ظاہر ہے کہ یہ میزائل ایران میں بنے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ میزائل سینکڑوں عام لوگوں کی جان لے سکتی تھی اور اس سے ظاہر ہے ایرانی حکومت کا برتاؤ مسلسل خراب ہو رہا ہے۔

انہوں نے کہاکہ پوری دنیا کے امن و سلامتی کے لئے خطرہ بنی ایرانی حکومت کی قلعی کھولنے کے لئے ہمیں ایک آواز ہونا چاہئے ۔ انہوں نے کہا کہ بین الاقوامی سطح پر امن و سلامتی ایران کے جارحانہ رویہ کے خلاف ہمارے ایک ساتھ کام کرنے پر منحصر کرتی ہے۔ ہیلی نے کہا کہ ایران مشرق وسطی میں ’آگ کو ہوا‘ دے رہا ہے اور امریکہ اس کے خلاف ایک بین الاقوامی اتحاد تیار کرے گا۔ ان میں سفارتی اقدامات بھی شامل ہوں گے ۔اس درمیان اقوام متحدہ میں ایرانی مشن نے کہا کہ یہ ثبوت امریکی ایجنڈے کو پورا کرنے کے لئے ’من گھڑت‘بنائے گئے ہیں۔ ایرانی مشن کے ترجمان کی جانب سے جاری بیان میں کہا ’’یہ الزام یمن میں امریکہ کی ملی بھگت سے سعودی عرب کی جانب سے کئے گئے جنگی جرائم کو چھپانے کی کوشش بھی ہے‘‘۔اقوام متحدہ جنرل سکریٹری اینٹونیو گوئترس کی رپورٹ کے مطابق ریاض پر داغے گئے میزائل اور جولائی میں مکہ کے نزدیک گرے میزائل کے ملبے سے اشارے ملتے ہیں کہ دونوں ایک ہی جگہ بنے ہیں حالانکہ رپورٹ میں یہ دعوی نہیں کیا گیا ہے کہ یہ میزائل ایران سے آئے تھے ۔ایران کی وزارت خارجہ نے پہلے کہا تھا کہ نومبر میں داغے گئے میزائل سعودی اتحاد کے حملے کے جواب میں حوثی باغیوں کی ’’آزادانہ کارروائی‘‘تھی۔

TOPPOPULARRECENT