Wednesday , December 12 2018

ایران کے میزائیل تجربات پر امریکہ کو تشویش

پیر کو اقوام متحدہ سلامتی کونسل اجلاس میں غور کیلئے اصرار
اقوام متحدہ 12 مارچ ( سیاست ڈاٹ کام ) امریکہ نے اقوام متحدہ سلامتی کونسل سے کہا ہے کہ وہ پیر کو ایک اجلاس میں ایران کے حالیہ بیالسٹک میزائیل تجربات پر غور کرے ۔ امریکی سفیر برائے اقوام متحدہ نے یہ بات کہی ۔ سفیر سامنتا پاور نے کل ایک بیان جاری کرتے ہوئے بتایا کہ ایران کے ان نیوکلئیر تجربارت پر امریکہ بہت زیادہ متفکر ہے جو اشتعال انگیز ہے اور علاقہ کا توازن متاثر کرسکتے ہیں۔ ایران نے چہارشنبہ کو دو طویل فاصلہ تک وار کرنے کی صلاحیت کے حامل بیالسٹک میزائیلس کا تجربہ کیا تھا ۔ اسی طرح کے تجربات منگل کو بھی کئے گئے تھے ۔ یہ تجربات ایسے وقت میں کئے گئے تھے جب دو ماہ قبل ہی ایران نے نیوکلئیر معاملت کو قطعیت دی تھی ۔ سامنتا پاور نے کہا کہ ایرانی فوجی قائدین نے ادعا کیا ہے کہ یہ میزائیل اسرائیل سے پیدا ہونے والے خطرہ سے نمٹنے تیار کئے گئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہم اس طرح کی دھمکیوں کی مذمت کرتے ہیں اور دوسرا ملک بھی اقوام متحدہ سلامتی کونسل کا رکن ہے ۔ ایران کیساتھ طئے پائے معاہدہ کے تحت جو تحدیدات ایران پر عائد کی گئی تھیں ان میں بیشتر کالعدم ہوگئی ہیں۔ اس معاہدہ پر 16 جنوری سے عمل آوری کا آغاز ہوا ہے ۔ ایک قرار داد کے تحت تاہم ایسے بیالسٹک ہتھیاروں کے تجربات و منتقلی پر ہنوز امتناع عائد ہے جن کے ذریعہ نیوکلئیر جنگی ساز و سامان منتقل کیا جاسکتا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT