Monday , December 11 2017
Home / Top Stories / ایس ایچ او کی کرسی پر رادھے ماں کا رقص

ایس ایچ او کی کرسی پر رادھے ماں کا رقص

پولیس اسٹیشن میں خودساختہ خاتون بھگوان کی من مانی کی تحقیقات
نئی دہلی ۔ 5 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) پولیس اسٹیشن میں ایس ایچ او کی کرسی پر بیٹھ کر خودساختہ خاتون بھگوان رادھے ماں کے رقص کا متنازعہ ویڈیو منظرعام پر آنے کے بعد دہلی پولیس دباؤ کا شکار ہوچکی ہے۔ یہاں رام لیلا فنکشن میں بھی پولیس ملازمین کے ساتھ گانے بجانے کی تصویریں بھی منظرعام پر آچکی ہیں۔ اس واقعہ کے بعد دہلی پولیس کو شدید تنقیدوں کا سامنا ہے۔ اس نے ان واقعات کی تحقیقات کا حکم دیدیا ہے۔ ایک تصویر جو وویک وہار پولیس اسٹیشن میں لی گئی ہے، بتایا گیا ہیکہ اسٹیشن ہاؤز آفیسر سنجے شرما لال اور سنہرے شال کو پہن کر ہندو بھکتوں کی طرح ہاتھ جوڑ کر خودساختہ گاڈ دیمن کے سامنے کھڑے ہیں۔ یہ رادھے ماں یہاں جی ٹی پی انکلیو مقام پر رام لیلا فنکشن میں بھی حاضر ہوئیں جہاں پانچ پولیس ملازمین کے ساتھ بھگتی گیت گاتے ہوئے دکھایا گیا ہے۔ یہ پانچ پولیس ملازم جی ٹی پی انکلیو پولیس اسٹیشن سے تعلق رکھتے ہیں۔ ان پولیس ملازمین کی دھن پر رادھے ماں کو رقص کرتے ہوئے دکھایا گیا ہے۔ ویڈیو میں پانچ پولیس ملازمین کو بتایا گیا ہے جو گاڈ ویمن کے ساتھ ناچ رہے ہیں۔ یہ ویڈیو گاڈ ویمن کے فیس بک پر اپ لوڈ کیا گیا ہے۔ ان پولیس ملازمین میں اسسٹنٹ سب انسپکٹر، برج بھوشن اور رادھے کرشن، ہیڈ کانسٹیبلس پرمود اور کانسٹیبلس ستیش اور رابندر شامل ہیں۔ جوائنٹ کمشنر پولیس ویسٹرن رینج رویندر یادو نے کہاکہ ایس ایچ آر اور پانچ پولیس ملازمین کے خلاف تحقیقات کا حکم دیا گیا ہے۔ اس معاملہ کی تحقیقات ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر پولیس رتبہ کے آفیسر کررہے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT