Friday , June 22 2018
Home / شہر کی خبریں / ایس سی، ایس ٹی طرز پر بی سی طبقات کو بھی سب پلان کا مطالبہ

ایس سی، ایس ٹی طرز پر بی سی طبقات کو بھی سب پلان کا مطالبہ

منشور میں شامل کرنے پر زور، محمد علی شبیر کی ڈگ وجے سنگھ کے اجلاس میں تجویز

منشور میں شامل کرنے پر زور، محمد علی شبیر کی ڈگ وجے سنگھ کے اجلاس میں تجویز

حیدرآباد /14 مارچ (سیاست نیوز) سابق ریاستی وزیر محمد علی شبیر نے کانگریس کے انتخابی منشور میں اقلیتوں اور بی سی طبقات کو ایس سی، ایس ٹی طبقات کے طرز پر سب پلان کی تشکیل کے وعدہ کو شامل کرنے کا مطالبہ کیا۔ آج گاندھی بھون میں تلنگانہ کانگریس منشور کمیٹی اور تشہیری کمیٹی کا کانگریس کے جنرل سکریٹری ڈگ وجے سنگھ نے جائزہ لیا، جس میں صدر تلنگانہ پردیش کانگریس پی لکشمیا، ورکنگ پریسیڈنٹ اتم کمار ریڈی، تلنگانہ تشہیری کمیٹی کے صدر دامودھر راج نرسمہا اور معاون صدر محمد علی شبیر کے علاوہ منشور کمیٹی کے صدر نشین ڈی سریدھر بابو اور دیگر قائدین نے شرکت کی۔ اس دوران ڈگ وجے سنگھ نے کانگریس کے انتخابی منشور اور تشہیری مہم کے لئے ارکان سے تجاویز طلب کی، جس پر محمد علی شبیر نے اقلیتوں اور بی سی طبقات کے لئے ایس سی و ایس ٹی طبقات کے طرز پر سب پلان تیار کرنے کے وعدہ کو منشور میں شامل کرنے کی تجویز پیش کی۔ انھوں نے بتایا کہ 16 دسمبر 2012ء کو کانگریس کے جلسہ عام میں یہ قرارداد منظور کی گئی تھی۔ انھوں نے اپنی جانب سے ریاستی حکومت اور پارٹی ہائی کمان کو روانہ کردہ مکتوبات کی نقل بھی پیش کی۔

اجلاس میں پسماندہ طبقات اور اقلیتوں کے لئے نئی فلاحی اسکیمات پیش کرنے کا جائزہ لیا گیا اور دیگر جماعتوں سے بہتر منشور تیار کرنے سے اتفاق کیا گیا۔ علاوہ ازیں پسماندہ طبقات سے اس مسئلہ پر بات چیت کے لئے زور دیا گیا اور سماج کے تمام طبقات کے احاطہ کا فیصلہ کیا گیا۔ اس دوران منشور میں نئی تجاویز عوام سے حاصل کرنے کے لئے علحدہ ویب سائٹ تیار کرنے ڈگ وجے سنگھ نے مشورہ دیا اور 22 مارچ تک منشور کی حکمت عملی اور انتخابی تشہیر کے لئے منصوبہ بندی کی ہدایت دی۔ کانگریس کے جنرل سکریٹری نے تلنگانہ میں 15 اور سیما۔ آندھرا میں 15 جملہ 30 بہترین مقررین کے انتخاب اور انتخابی تشہیر کے لئے خصوصی پلان تیار کرنے کا مشورہ دیا اور تلنگانہ میں صدر کانگریس سونیا گاندھی، نائب صدر راہول گاندھی کے علاوہ کانگریس کے سینئر قائدین کے جلسوں کے انعقاد کی منصوبہ بندی پر زور دیا۔ انھوں نے میڈیا کے لئے خصوصی منصوبہ تیار کرنے کے علاوہ کانگریس کے تمام قائدین کا تعاون حاصل کرنے اور کانگریس نظریات سے اتفاق کرنے والی تنظیموں و دانشوروں کو اعتماد میں لینے کا مشورہ دیا۔

TOPPOPULARRECENT