Thursday , July 19 2018
Home / ہندوستان / ایس سی ؍ ایس ٹی قانون کے بارے میں مایاوتی کا موقف برعکس ، پاسوان کی مایاوتی پر تنقید

ایس سی ؍ ایس ٹی قانون کے بارے میں مایاوتی کا موقف برعکس ، پاسوان کی مایاوتی پر تنقید

لکھنؤ ۔ 4 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) صدر بی ایس پی مایاوتی نے پیر کے دن بھارت بند کی تائید کی تھی جس کا اہتمام دلت تنظیموں نے ایس سی؍ ایس ٹی قانون کی دفعات میں سپریم کورٹ کے فیصلہ کے ذریعہ نرمی پیدا کرنے کے خلاف کیا تھا لیکن یوپی کی سابق چیف منسٹر مایاوتی نے کہا کہ وہ اس قانون کے استحصال کے خلاف شخصی طور پر اقدامات کریں گی۔ مایاوتی نے کہا کہ وہ ایس سی ؍ ایس ٹی قانون میں تبدیلی کی مخالف ہیں اور اس کی مذمت کرتی ہیں لیکن احتجاج کے دوران تشدد بھی قابل مذمت ہے۔ انہوں نے غیرسماجی عناصر کو اس کا ذمہ دار قرار دیا۔ بی جے پی کی حلیف پارٹی کے صدر رام ولاس پاسوان نے جو مرکزی وزیر بھی ہیں، مایاوتی پر الزام عائد کیا کہ وہ ’’دوہرے معیار‘‘ اختیار کررہی ہیں جو دلتوں کے خلاف سپریم کورٹ کے فیصلہ کے خلاف ہے۔ پاسوان نے کہا کہ وہ یوپی کی چیف منسٹر رہ چکی ہیں اور اس وہ اس استحصال کی خلاف تھیں۔ پاسوان نے جو ایک نامور دلت قائد ہیں اور بہار سے ان کا تعلق ہے کہا کہ سابق مایاوتی حکومت نے اکٹوبر 2007ء میں رہنمایانہ خطوط جاری کئے تھے جو ایس سی ؍ ایس ٹی قانون کے استحصال کے خلاف تھے۔ اب وہ بے نقاب ہوچکی ہیں۔ ایک طرف تو بحیثیت چیف منسٹر ان کا طریقہ کار ہے اور دوسری طرف دلت نوجوانوں کے سپریم کورٹ کے فیصلہ کے خلاف احتجاج کی تائید کرتی ہیں۔ یہ ان کا دوہرا معیار ہے کیونکہ انہیں ایسا کرنے کا کوئی اخلاقی حق نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ وہ دلتوں کو گمراہ کررہی ہیں اور ان کی بی ایس پی سب سے بڑی دلت دشمن پارٹی ہے۔

TOPPOPULARRECENT