Friday , December 15 2017
Home / شہر کی خبریں / ایل پی جی سلینڈرس کی غیرقانونی منتقلی پر 50 ہزار کا جرمانہ

ایل پی جی سلینڈرس کی غیرقانونی منتقلی پر 50 ہزار کا جرمانہ

مارکٹ ڈسپلن کیلئے آئیل مارکٹنگ کمپنیوں کے نئے رہنمایانہ خطوط
حیدرآباد ۔ 22 اکٹوبر (ایجنسیز) آئیل مارکٹنگ کمپنیوں (OMCS) نے ڈومیسٹک ایل پی جی سلینڈرس کو غیرقانونی طور پر بلیک مارکٹ میں فروخت کرنے کو روکنے اور اس کے تدارک کیلئے ان کے قواعد میں سختی پیدا کی ہے۔ مارکٹ ڈسپلن کیلئے نئے رہنمایانہ خطوط کے مطابق غیرقانونی طور پر منتقل اور فروخت کئے جانے والے ہر سلینڈر پر 50,000 روپئے تک جرمانہ عائد کیا جاسکتا ہے حالانکہ ہر سال ہزاروں ڈومیسٹک ایل پی جی سلینڈرس کو اس کے مقصد سے ہٹ کر دوسری طرف غیرقانونی طور پر بلیک مارکٹ میں فروخت کیا جاتا ہے۔ اس کے باوجود اس طرح کی سرگرمیوں میں ملوث ہونے والے ڈیلرس کو سزاء دینے کیلئے کوئی سخت قواعد نہیں ہیں۔ اوسطاً محکمہ سیول سپلائز کی ویجلنس ٹیم ہر ماہ ریاست میں بلیک مارکٹ میں غیرقانونی طور پر فروخت کئے جانے والے 10,000 ڈومیسٹک سلینڈرس ضبط کرتی ہے۔ اگرچیکہ اس طرح کی غیرقانونی منتقلی میں ملوث ڈیلرس کے خلاف کیسیس درج کئے جاتے ہیں لیکن اس کے بعد ان کے خلاف سخت کارروائی نہیں کی جاتی اور سزاء نہیں دی جاتی ہے اور قصورواروں کو انتباہ دے کر چھوڑ دیا جاتا ہے اور انہیں کوئی سزاء نہیں دی جاتی اور نہ ہی ان کی ڈیلرشپس کو منسوخ کیا جاتا ہے۔ اس دوران ڈومیسٹک سلینڈرس کے ڈائیورشن میں بہت اضافہ ہورہا ہے۔ بالخصوص مرکز کی جانب سے ہر کسٹمر کو سبسیڈائزسلینڈرس کی دستیابی پر 12 ۔ سلینڈرس کی حد عائد کئے جانے کے بعد سے او ایم سیز نے اس مسئلہ کے تدارک کیلئے ضروری اقدامات اور اس سلسلہ میں کارروائی کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ او ایم سی کے عہدیداروں کا کہنا ہیکہ نئے مارکٹ ڈسپلن رہنمایانہ خطوط تمام ایل پی جی ڈسٹری بیوٹرس کو روانہ کئے گئے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT