Tuesday , November 21 2017
Home / سیاسیات / ایمرجنسی کے بعد ملک میں نئی سیاست کا آغاز: مودی

ایمرجنسی کے بعد ملک میں نئی سیاست کا آغاز: مودی

NEW DELHI, OCT 11 (UNI):- Prime Minister Narendra Modi (R) felicitating Veteran BJP leader and Governor of Gujarat Om Prakash Kohli (L) during Loktantra Prahari Abhinandan, a programme organised on the occasion 113th birth anniversary of Lok Nayak Jayaprakash Narayan at Vigyan Bhavan in Delhi on Sunday. UNI PHOTO-9U

نئی دہلی۔11اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) وزیراعظم نریندر مودی نے ایمرجنسی کو ملک کی جمہوریت کے لئے سب سے بڑا دھکہ قرار دیتے ہوئے آج کہا کہ ایمرجنسی کی یادوں کو باقی و برقرار رکھا جانا چاہئے تاکہ جمہوریت ڈھانچوں کو مزید مستحکم بنایا جاسکے۔ ایمرجنسی کے خلاف جدوجہد سے ہندوستان میں ایک نئی قسم کی سیاست کا آغاز اور سیاسی قائدین کی ایک نئی نسل متعارف ہوئی تھی۔ لوک نائک جئے پرکاش نارائن کے 113 ویں یوم پیدائش تقاریب کے موقع پر منعقدہ ایک پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم مودی نے کہا کہ ’’ایمرجنسی، جمہوریت کے لئے سب سے بڑا دھکہ تھی۔ اس مدت کے دوران ملک جس قسم کے بحران سے دوچار ہوا تھا اس سے ہندوستانی جمہوریت مزید طاقتور انداز میں ابھرآئی۔ میں ان تمام کا ممنون و مشکور ہوں جنہوں نے ایمرجنسی کے خلاف جدوجہد کی تھی۔ ایمرجنسی کو یاد رکھا جانا چاہئے ناکہ اس لئے کہ اس پر رویا پیٹا جائے بلکہ جمہوری اقدار کو مستحکم کرنے کے لئے ہمارے عزم کو مستحکم بنایا جائے۔‘‘ نریندر مودی نے لوک نائک جئے پرکاش نارائن اور 1975-76 میں ان کے ساتھ ایمرجنسی کے خلاف جدوجہد کرتے ہوئے جیل جانے والے دیگر قائدین بشمول اٹل بہاری واجپائی، جارج فرنانڈیز، ایل کے اڈوانی اور اکالی دل سربراہ پرکاش سنگھ بادل کو خراج تحسین ادا کیا۔ مودی نے کہا کہ ایمرجنسی کے دوران اپوزیشن قائدین جیلوں میں تھے اور باہر کے حالات سے بالکل باخبر تھے لیکن ہندوستانی عوام نے 1977ء کے انتخابات میں جرأت اور دانشمندی کا مظاہرہ کرتے ہوئے ان تمام قائدین کو بھاری اکثریت سے منتخب کیا اور اس وقت کے سرکردہ حکمرانوں کو گھر بھیج دیا۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT