Friday , September 21 2018
Home / شہر کی خبریں / ایمسیٹ تنازعہ کو باہمی مذاکرات سے حل کرنے کا مشورہ

ایمسیٹ تنازعہ کو باہمی مذاکرات سے حل کرنے کا مشورہ

حیدرآباد۔ 7 ۔ جنوری (سیاست نیوز) مرکزی وزیر شہری ترقی ایم وینکیا نائیڈو نے آندھراپردیش اور تلنگانہ ریاستوں کو مشورہ دیا کہ وہ باہمی مذاکرات کے ذریعہ ایمسیٹ تنازعہ کی یکسوئی کرلیں ۔ نئی دہلی میں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے وینکیا نائیڈو نے کہا کہ ہر مسئلہ پر مرکزی حکومت مداخلت نہیں کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ بہتر یہی ہوگا کہ آندھراپردیش

حیدرآباد۔ 7 ۔ جنوری (سیاست نیوز) مرکزی وزیر شہری ترقی ایم وینکیا نائیڈو نے آندھراپردیش اور تلنگانہ ریاستوں کو مشورہ دیا کہ وہ باہمی مذاکرات کے ذریعہ ایمسیٹ تنازعہ کی یکسوئی کرلیں ۔ نئی دہلی میں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے وینکیا نائیڈو نے کہا کہ ہر مسئلہ پر مرکزی حکومت مداخلت نہیں کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ بہتر یہی ہوگا کہ آندھراپردیش اور تلنگانہ حکومتیں باہمی بات چیت کے ذریعہ مسئلہ کا حل تلاش کرلیں یا پھر متعلقہ گورنر مسئلہ کے حل کی کوشش کریں۔ وینکیا نائیڈو نے کہا کہ مرکز کی مداخلت کی صورت میں غیر ضروری تنازعات کھڑے ہوں گے اور مرکز صرف اسی وقت مداخلت کرتا ہے، جب دونوں ریاستیں اس سے خواہش کریں۔ انہوں نے بتایا کہ وہ مرکزی وزیر داخلہ کو بھی اس موقف سے آگاہ کردیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ معمولی سے مسائل کو بڑا کرتے ہوئے طلبہ کو پریشانی اور الجھن میں مبتلا کرنا ٹھیک نہیں ہے۔ نئی ریاستوں کی تشکیل کے بعد جو بھی مسائل پیدا ہوتے ہیں، ان کے حل کیلئے گورنر سے رجوع ہونا دونوں حکومتوں کی ذمہ داری ہے ۔ گورنر کے ذریعہ مسئلہ کا حل تلاش کیا جاسکتا ہے لیکن ایمسیٹ کے تنازعہ میں دونوں ریاستوں نے گورنر کے ذریعہ مسئلہ کے حل کی کوشش نہیں کی ۔

انہوں نے بتایا کہ کل آندھراپردیش کے وزیر سرینواس راؤ نے ان سے ملاقات کرتے ہوئے مرکز کی مداخلت کی اپیل کی تھی لیکن انہوں نے واضح کردیا کہ مرکز اس طرح کے امور میں مداخلت نہیں کرے گا۔ وینکیا نائیڈو نے کہا کہ ریاست کی تقسیم سے متعلق قانون میں شامل امور پر کسی بھی اختلاف کی صورت میں گورنر کو مداخلت کرنی چاہئے یا پھر مرکزی وزیر داخلہ مداخلت کرتے ہیں۔ وہ موجودہ صورتحال سے وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ کو واقف کرائیں گے۔ وینکیا نائیڈو نے کہا کہ اگر مرکز ریاست کے معاملات میں مداخلت کریں تو کئی تنقیدوں کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے۔ تاہم اگر دونوں ریاستیں مداخلت کی اپیل کریں تو اسی وقت مرکز کا رول شروع ہوگا۔ واضح رہے کہ تلنگانہ اور آندھراپردیش کے وزرائے تعلیم نے نئی دہلی میں اس مسئلہ پر مرکز کو اپنے موقف سے آگاہ کیا تھا۔ ایمسیٹ کے انعقاد کے سلسلہ میں دونوں ریاستیں اپنے موقف پر اٹل ہیں۔ آندھراپردیش حکومت نے ایمسیٹ کے شیڈول کا اعلان کردیا جب کہ تلنگانہ حکومت اسے تسلیم کرنے تیار نہیں۔

TOPPOPULARRECENT