Wednesday , December 19 2018

ایمسیٹ کے انعقاد پر تلنگانہ اور آندھراپردیش میں تنازعہ

نئی دہلی ؍ حیدرآباد 6 جنوری (این ایس ایس) کامن انٹرنس ٹسٹ کے انعقاد کے سلسلہ میں آندھراپردیش اور تلنگانہ حکومتوں کے مابین جاری تعطل ایسا لگتا ہے کہ قانونی لڑائی کی شکل اختیار کرسکتا ہے۔ ایمسیٹ کے معاملہ میں دونوں ریاستوں ایک دوسرے کو مورد الزام قرار دے رہی ہیں۔ آندھراپردیش حکومت نے پہلے ہی دونوں ریاستوں کے طلباء کے لئے ایمسیٹ شی

نئی دہلی ؍ حیدرآباد 6 جنوری (این ایس ایس) کامن انٹرنس ٹسٹ کے انعقاد کے سلسلہ میں آندھراپردیش اور تلنگانہ حکومتوں کے مابین جاری تعطل ایسا لگتا ہے کہ قانونی لڑائی کی شکل اختیار کرسکتا ہے۔ ایمسیٹ کے معاملہ میں دونوں ریاستوں ایک دوسرے کو مورد الزام قرار دے رہی ہیں۔ آندھراپردیش حکومت نے پہلے ہی دونوں ریاستوں کے طلباء کے لئے ایمسیٹ شیڈول کا اعلان کردیا ہے۔ اُس کا یہ وقت ہے کہ آندھراپردیش تنظیم جدید قانون کی گنجائش کے تحت ایسا کیا گیا ہے۔ دوسری طرف تلنگانہ حکومت نے اپنے طور پر علیحدہ ایمسیٹ منعقد کرنے کا اعلان کیا اور کہاکہ وہ عنقریب شیڈول جاری کرے گی۔ دونوں ریاستوں کے مابین یہ تنازعہ گورنر ای ایس ایل نرسمہن تک پہونچ چکا ہے جنھوں نے دونوں ریاستوں کے وزرائے تعلیم کے ساتھ سلسلہ وار ملاقات کرتے ہوئے تعطل ختم کرنے کی کوشش کی۔ اِس کے باوجود یہ بحران برقرار ہے اور فریقین اپنے موقف پر قائم ہیں۔ تلنگانہ کے وزیر تعلیم جگدیشور ریڈی اور آندھراپردیش کے وزیر تعلیم جی سرینواس راؤ نے مرکزی وزیر فروغ انسانی وسائل سمرتی ایرانی کی جانب سے نئی دہلی میں منعقدہ وزرائے تعلیم کانفرنس میں نہ صرف شرکت کی بلکہ اِس موضوع کو مرکز سے رجوع کیا۔ دونوں وزراء نے میڈیا سے یہی کہاکہ ایمسیٹ پر جاری تنازعہ کو سمرتی ایرانی سے رجوع کریں گے۔ آندھراپردیش کے وزیر تعلیم بحران کے لئے تلنگانہ حکومت کو مورد الزام قرار دے رہے ہیں۔ دوسری طرف تلنگانہ کے وزیر تعلیم کا یہ موقف ہے کہ آندھراپردیش حکومت نے اُن سے مشاورت کے بغیر ہی ایمسیٹ شیڈول کا اعلان کردیا۔

TOPPOPULARRECENT