Wednesday , May 23 2018
Home / شہر کی خبریں / ایم ایس کریٹو اسکولس کا 4 روزہ ’’اخلاق شو‘‘ تزک احتشام کے جاری

ایم ایس کریٹو اسکولس کا 4 روزہ ’’اخلاق شو‘‘ تزک احتشام کے جاری

ہمارے بچے تعلیم مکمل کرکے تجارت کو اولین ترجیح دیں ،ایم ایس کے اخلاق شو میں چیرمین عبدالطیف خان کا خطاب
حیدرآباد 19 / فروری : ( پریس نوٹ ) ایم ایس کریٹو اسکولس کا چار رو زہ سالانہ پروگرام اخلاق شو ہفتہ کے روز سے پورے تزک و احتشام کے ساتھ نامپلی کے للیتا کلاتھورم (Open Air Theatre) پبلک گارڑن میں منایا جارہا ہے۔ جس میں طلباء اسٹالس اور اسٹیج شو کے ذریعہ تجارت کرنے کے اسلامی طریقے سے سامعین کو روشناس کرارہے ہیں امسال اخلاق شو کا موضوع تجارت پر مبنی ہے۔ جسکا عنوان ’’اسلام کے تجارتی اصول‘‘ ہیں ۔ اس عنوان کے تحت چلنے والے اس سالانہ پروگرام میں طلباء نے 20 اسٹالس لگائیں ہیں اور ان اسٹالس کو اس طرح سجایا کہ اسٹالس کا مشاہدہ کرنے والے بآسانی تجارت کرنے کے اسلامی طریقے کا سے واقف ہو سکتے ہیں۔ اسٹالس کا معائینہ کرنے والے وزیٹرس کا مہذب انداز میں خیر مقدم کرتے ہوئے طلباء بڑے ہی نفس انداز میں تجارت کے اسلامی نکتہ نگاہ سے وزیٹرس کو واقف کراتے ہیں 20 سے زائد تجارتی موضوع ہیں جس پر طلباء نے اپنے اپنے اسٹالس کو Decorate کیا ہے۔ان اسٹالس کے علاوہ اسٹیج شو کے ذریعہ بھی سامعین کو پر اثرانداز میں اسلامی تجارت کرنے کے طریقے کار سے روشناس کرارہے ہیں۔ اٹیج شو کے دوران اردو ‘ تلگو‘ انگریزی اور عربی زبان میں پر مفزتقاریر‘ دل کو چھو لینے والے حمد اور نعت پیش کرکے طلباء نے سامعین کی نہ صرف تجسین حاصل کیا بلکہ انہیں حیرت زدہ بھی کردیا۔اس اخلاق شو میں اسٹیج شو اور اسٹالس کے ذریعہ اپنے فن کا مظاہر کر کے ایم ایس کے طلباء نے سامعین کو یہ واضح پیغام دیا کہ وہ ماڈرن ایجوکیشن کے ساتھ ساتھ دینی علوم میں بھی اچھی خاصی واقفیت رکھتے ہیں۔ایم ایس ایجوکیشن اکیڈمی کا Motto بھی یہیں ہے کہ طلباء ماڈرن ایجوکیشن کے ساتھ دینی تعلیم میں دستری حاصل کریں۔ ساتھ ہی طلباء کی اعلیٰ تربیت ہو اور اخلاق کا کامل نمونہ بن کر سماج کو ترقی کی راہ میں گامزان کریں یہ اخلاق شو 20 فروری تک جاری رہے گا۔ ایم ایس ایجوکیشن اکیڈمی کے چیرمین محمد عبدالطیف خان نے ’’اخلاق شو‘‘ میں طلباء اور اولیائے طلباء کو خطاب کرنے ہوئے کہا کہ ایم ایس تعلیم و تربیت کے ذریعہ طلباء کو اخلاق کا ایک کامل نمونہ بنانا چاہتا ہے جو اپنے مسقبل کی زندگی میں سماج کا اثاثہ بننے اور لوگوں کو فیض پہنچانے والا ہو۔ انہوں نے کہا کہ اس اخلاق شو کے ذریعہ ہمارا مقصد طلباء کو ایک ذمہ دار شہری بنانا ہے جو دوسروں کو فائدہ پہنچانے والا بنے۔ ایم ایس کی یہ کوشیشں ہیں کہ ہمارے بچے تعلیم کے ساتھ ساتھ تربیت بھی حاصل کریں ۔ اور تعلیم مکمل کرکے تجارت کو اولین ترجیح دیں ‘‘ ہمارے بچے Leader بنیں اور اپنے اخلاق سے ساری دنیا میں اسلام کی صحیح امیج پیش کریں انہوں نے ایم ایس کی کارکردگی اور مستقبل کا پلان بتاتے ہوئے کہا کہ ایم ایس ایجوکیشن اکیڈمی کے ابتک 78 برانچس حیدرآباد سمیت ملک کے مختلف شہروں میں کھولے جا چکے ہیں ۔ جن میں سے ممبئی میں چار‘ دہلی میں چار‘ اتر پردیش میں چار‘ اندھرا پردیش میں تین‘ اتراکھنڈ میں ایک اور تامل ناڈو میں ا برانچ شامل ہیں۔ انہوں نے کہہ کہ ایم ایس کے منیجمنٹ میں اس وقت ایم ایس کے پاس اوٹ 5 طلباء شامل ہیں جنہیں ڈائرکٹر بنایا گیا۔انہوں نے ایم ایس کے خواندگی (Literacy Campaign) پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ ایم ایس اپنے Vision 2036 پلان کے تحت لیٹریسی مہم کے ذریعہ 2036 تک ملک کے تمام افراد کو پڑھنا سکھائے گا۔ انہوں نے مزید کہا کہ ایم ایس اولیائے طلباء کے مفاد اور سہولت کا ہمیشہ ترجیح دی ہے اور ان کے لئے (Parent Empowerment Network) (PEN) کے تحت ایک پروگرام ڈئزائن کیا ہے۔ جس کے تحت بچوںکی نگہداشت اور تربیت کس طرح کی جائے اسکی ٹرینگ ماؤں کی دی جائے گی تا کہ وہ اپنے گھروں میں بچوں کی ٹھیک طرح پرورش کرسکے۔جلسے کے چیف گیسٹ سابقہ آئی اے ایس افسر خواجہ معین الدین نے طلباء سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وہ محنت کو اپنے شیوا بنائیں۔ کیونکہ انسان بنا محنت کے کوئی چیز حاصل نہیں کرسکتا ہے۔ انہوں نے ایم ایس طلباء کے اسٹالس اور اسٹیج شو کو دیکھ کر انکی ستائش کی اور کہا کہ ایم ایس کے اسکولوں میں بچوں کی تعلیم پرپوری توجہ دی جارہی ہے اور جس کا یہ نتیجہ ہے کہ یہاں کے بچے نمایاں ریزلٹ دے رہے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT