Saturday , December 16 2017
Home / شہر کی خبریں / ایم ایل سی نشستوں کیلئے آج رائے دہی

ایم ایل سی نشستوں کیلئے آج رائے دہی

تمام تر انتظامات مکمل، چیف الکٹورل آفیسر بھنور لعل کی پریس کانفرنس

حیدرآباد۔/8مارچ، ( سیاست نیوز) تلنگانہ قانون ساز کونسل کے حلقہ اساتذہ حیدرآباد و رنگاریڈی و محبوب نگر ایم ایل سی نشست کیلئے کل یعنی 9مارچ کو رائے دہی صبح 8 بجے تا 6 بجے شام منعقد ہوگی۔ اس رائے دہی کے پُرامن انعقاد کو یقینی بنانے کیلئے تمام تر انتظامات مکمل کرلئے گئے ہیں۔ آج یہاں اپنے چیمبر میں اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے مسٹر بھنور لعل چیف الکٹورل آفیسر ریاست تلنگانہ و آندھرا پردیش نے یہ بات بتائی۔ انہوں نے کہا کہ پہلا اہمیتی ووٹ (First Preferencial Vote) دینا ضروری ہوگا۔ علاوہ ازیں ایسے رائے دہندے ( ووٹرس ) جو دو ووٹ ( دونوں مقامات پر ووٹ کا حق رکھتے ہیں ) رکھتے ہوں انہیں چاہیئے کہ کوئی ایک ہی ووٹ کا استعمال کریں۔ اگر کوئی دو ووٹ ڈالنے (دونوں مقامات پر ووٹ ڈالنے ) کی صورت میں انہیں گرفتار کرکے سخت قانونی کارروائی کی جائے گی۔ انہوں نے مزید بتایا کہ گورنمنٹ ایڈیڈ اساتذہ کو ووٹ کا حق دیا گیا ہے اور انہیں ووٹ ڈالنے کیلئے اجازت دینے کی باقاعدہ طور پر تمام ایڈیڈ مدارس کو سخت ہدایات دی گئی ہیں۔ اگر کوئی بھی ایڈیڈ اسکول انتظامیہ اپنے اساتذہ کو ووٹ ڈالنے کیلئے اجازت نہ دینے کی صورت میں شکایت کے وصول ہونے پر اس اسکول انتظامیہ کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ حلقہ اساتذہ کی ایک نشست کیلئے جملہ 12امیدوار انتخابی میدان میں ہیں۔ جبکہ کل 9 مارچ کو منعقد ہونے والی رائے دہی کیلئے تینوں اضلاع حیدرآباد، رنگاریڈی اور محبوب نگر میں جملہ 126 مراکز رائے دہی قائم کئے گئے ہیں۔ مسٹر بھنورلعل نے کہا کہ حلقہ اساتذہ تلنگانہ قانون ساز کونسل انتخاب میں 23,789 رائے دہندے ( اساتذہ ) اپنے حق رائے دہی سے استفادہ کریں گے۔ مراکز رائے دہی پہونچنے والے رائے دہندوں کو دی گئی ہدایات کا تذکرہ کرتے ہوئے چیف الکٹورل آفیسر ریاست تلنگانہ و آندھرا پردیش نے بتایا کہ کسی بھی ووٹر کو مرکز رائے دہی میں موبائیل فون ساتھ لے جانے کی اجازت نہیں رہے گی اور اپنے حق رائے دہی سے استفادہ کیلئے رائے دہندوں کو چاہیئے کہ وہ اپنے ساتھ ووٹر شناختی کارڈ، ڈرائیونگ لائسنس، آدھار کارڈ، پیان کارڈ، ڈگری کے تصدیق کردہ صداقتنامہ کی کاپی، اپنا محکمہ جاتی شناختی کارڈ کے منجملہ کوئی ایک شناختی کارڈ ساتھ رکھیں۔ انہوں نے کہا کہ مذکورہ کسی ایک شناختی کارڈ میں سے کوئی ایک شناختی کارڈ نہ رکھنے والے رائے دہندوں کو ووٹ کے استعمال ( ووٹ ڈالنے) کی اجازت نہیں رہے گی۔ مسٹر بھنور لعل نے بتایا کہ ہر ضلع میں کنٹرول روم اور فلائینگ اسکواڈز قائم ہیں اور مراکز رائے دہی کے پاس بڑے پیمانے پر صیانتی انتظامات کئے گئے ہیں۔ انہوں نے ریاست آندھرا پردیش میں منعقد ہونے والے قانون ساز کونسل انتخابات کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ ریاست آندھرا پردیش میں ادارہ جات مقامی کے تین حلقہ جات کیلئے 17 مارچ کو انتخابات منعقد ہوں گے جبکہ ریاست آندھرا پردیش میں دو حلقہ جات اساتذہ اور تین گریجویٹ حلقہ جات کیلئے کل یعنی 9 مارچ کو ہی انتخابات ( رائے دہی ) منعقد ہوں گے، اور دونوں ہی تلگو ریاستوں تلنگانہ و آندھرا پردیش میں منعقد ہونے والے مذکورہ حلقہ جات کے انتخابات کے ووٹوں کی گنتی 20 مارچ کو ہوگی۔

TOPPOPULARRECENT