Monday , December 11 2017
Home / سیاسیات / ایم ایم خاں قتل کیس میں بی جے پی رکن پارلیمنٹ ملوث

ایم ایم خاں قتل کیس میں بی جے پی رکن پارلیمنٹ ملوث

چیف منسٹر دہلی ارویند کجریوال کا سنگین الزام
نئی دہلی ۔ 20 ۔ جون : ( سیاست ڈاٹ کام ) : چیف منسٹر ارویند کجریوال نے آج یہ مطالبہ کیا ہے کہ این ڈی ایم سی عہدیدار ایم ایم خاں قتل کیس کے سلسلہ میں مشرقی دہلی کے بی جے پی رکن پارلیمنٹ مہیش گری کو فی الفور گرفتار کرلیا جائے اور یہ الزام عائد کیا کہ وزیراعظم پر ایک ملزم کو تحفظ کرنے کی کوشش کررہے ہیں ۔ دریں اثناء چیف منسٹر کی قیام گاہ کے باہر مہیش گیری کی بھوک ہڑتال آج دوسرے دن میں داخل ہوگئی ۔ جو کہ ایم ایم خاں کے قتل کا الزام ثابت کرنے کا مطالبہ کررہے ہیں ۔ قبل ازیں ارویند کجریوال نے اپنے ٹوئیٹر پر کہا تھا کہ بی جے پی رکن پارلیمنٹ کو گرفتار کرلینا چاہئے ۔ انہوں نے طنزیہ انداز میں کہا ہے کہ ایم ایم خاں قتل کیس میں انہیں مودی پولیس کی جانب سے گرفتار کرلینا چاہئے تھا ۔ اس کے برخلاف انہیں تحفظ فراہم کررہی ہے ۔ لیفٹنٹ گورنر نجیب جنگ کو موسومہ ایک مکتوب میں کجریوال نے یہ الزام عائد کیا کہ ایم ایم خاں قتل کیس میں مہیش گیری اور نائب صدر نشین این ایم ڈی سی کرن سنگھ کو تحفظ فراہم کررہے ہیں ۔ جب کہ گیری نے کجریوال کو چیلنج کیا کہ ان کے الزامات پر عوامی مباحث کریں ۔ کجریوال کو روانہ ایک مکتوب میں بی جے پی رکن پارلیمنٹ نے انہیں کنسٹیوش کلب مدعو کیا تاکہ ا یم ایم خاں قتل کیس میں ان کے ملوث ہونے کا ثبوت پیش کیا جاسکے ۔ چونکہ کجریوال نے یہ چیلنج قبول نہیں کیا جس پر مہیش گیری اور پارٹی کارکنان چیف منسٹر کی قیام گاہ پہنچ کر بھوک ہڑتال پر بیٹھ گئے ۔ واضح رہے کہ مسٹر ایم ایم خاں ، نئی دہلی میونسپل کارپوریشن کے اسٹیٹ آفیسر تھے ۔ انہیں 16 مئی کو جامعہ نگر میں اس وقت گولی مار دی کہ جب ایک دن بعد مجلس بلدیہ کی ایک ہوٹل کو لیز پر دینے کے قطعی شرائط جاری کیے جانے والے تھے ۔۔

TOPPOPULARRECENT