Saturday , November 18 2017
Home / ہندوستان / این آئی اے کی کشمیر میں 12 مقامات پر چھاپہ مار کارروائیاں

این آئی اے کی کشمیر میں 12 مقامات پر چھاپہ مار کارروائیاں

معروف تاجر اور رشتہ داروں کے گھروں میں تلاشی، مشکوک دستاویزات و دیگر اشیاء برآمد
سری نگر ، 16 اگست (سیاست ڈاٹ کام) پاکستان سے ہونے والی مبینہ ٹیرر فنڈنگ کی جانچ کے سلسلے میں قومی تحقیقاتی ایجنسی (این آئی اے )نے آج وادی میں مشتبہ افراد کے خلاف تازہ کارروائی کرتے ہوئے گرمائی دارالحکومت سری نگر اور شمالی کشمیرکے دو اضلاع بارہمولہ و کپواڑہ میں قریب ایک درجن مقامات پر چھاپے مار کر تلاشی لی۔ سرکاری ذرائع نے بتایا ‘این آئی اے ٹیموں نے مقامی کرائم برانچ اور ریاستی پولیس کے ہمراہ گرمائی دارالحکومت سری نگر، شمالی کشمیر کے بارہمولہ، ٹنگمرگ اور ہندواڑہ میں قریب ایک درجن مقامات پر چھاپے مار کاروائیاں انجام دیں’۔ذرائع نے بتایا کہ یہ چھاپے علیحدگی پسندوں کے رشتہ دار اور حامیوں کے گھروں اور کاروباری اداروں پر مارے گئے ۔ ایک رپورٹ کے مطابق معروف تاجر ظہور احمد وٹالی کے رشتہ داروں اور اُن کے کاروبار سے وابستہ افراد کے گھروں پر بھی چھاپے مار کر تلاشی لی گئی۔ مذکورہ تاجر کی دہلی اور سری نگر رہائش گاہوں پر 4 جون کو چھاپہ مار کر تلاشی لی گئی تھی۔ذرائع نے بتایا کہ سری نگر میں این آئی اے کی جانب سے پیرباغ اور آلوچی باغ میں چھاپہ مار کاروائیاں انجام دی گئیں۔ انہوں نے بتایا کہ آلوچی باغ میں ظہور وٹالی کے ذاتی ڈرائیور کے گھر پر چھاپہ مارا گیا۔ انہوں نے بتایا کہ این آئی اے ٹیموں نے چھاپہ مار کاروائیوں کے دوران علیحدگی پسندوں اور معروف تاجر کے رشتہ داروں کے گھروں میں موجود دستاویزات کی باریک بینی سے جانچ پڑتال کی اور مبینہ طور پر کچھ دستاویزات اپنے قبضے میں لے لئے ۔ این آئی اے نے گزشتہ ماہ جولائی کی 30 تاریخ کو سرمائی دارالحکومت جموں کے بخشی نگر میں مقیم ایک سینئر وکیل دیویندر سنگھ بہل کی رہائش گاہ پر چھاپہ مارا تھا اور کئی گھنٹوں تک جاری رہنے والی تلاشی کے بعد انہیں اپنی حراست میں لیا تھا۔’جموں وکشمیر سوشل پیس فورم’ نامی تنظیم کے چیئرمین ایڈوکیٹ دیویندر سنگھ کے بارے میں بتایا جارہا ہے کہ اُن کے کشمیری علیحدگی پسند قائدین کے ساتھ قریبی تعلقات ہیں۔ خیال رہے کہ این آئی اے نے ٹیرر فنڈنگ کی جانچ کے سلسلے میں 24 جولائی کو 7 علیحدگی پسند لیڈران کو گرفتار کرکے نئی دہلی منتقل کیا جہاں انہیں ریمانڈ پر تہاڑ جیل میں مقید رکھا گیا ہے۔ گرفتار شدگان میں حریت ترجمان ایاز اکبر، گیلانی کے داماد الطاف احمد شاہ عرف الطاف فنتوش ، راجہ معراج الدین کلوال، سینئر حریت گ لیڈر پیر سیف اللہ، حریت کانفرنس ترجمان شاہد الاسلام، نیشنل فرنٹ چیئرمین نعیم احمد خان اور فاروق احمد ڈار عرف بٹہ کراٹے شامل تھے ۔این آئی اے نے کشمیر علیحدگی پسند قائدین و کارکنوں اور دوسرے لوگوں کے گھروں پر گذشتہ ماہ کے اوائل میں چھاپہ ماری کا سلسلہ لگاتار دو دنوں تک جاری رکھا تھا۔ چھاپہ مار کاروائیوں کے دوران کشمیر، جموں، دہلی اور ہریانہ میں قریب تین درجن جگہوں بشمول کشمیری علیحدگی پسند قائدین و کارکنوں، تاجروں اور مبینہ حوالہ ڈیلروں کے گھروں کی تلاشی لی گئی تھی۔ اگرچہ این آئی اے نے دعویٰ کیا تھا کہ چھاپوں کے دوران بڑے پیمانے پر نقدی رقوم، سونا اور مشکوک دستاویزات برآمد کئے گئے ، تاہم علیحدگی پسند قائدین نے اس دعوے کو یکسر مسترد کیا تھا۔ این آئی اے نے مئی کے تیسرے ہفتے میں علیحدگی پسند رہنماؤں بشمول حریت چیئرمین گیلانی، نیشنل فرنٹ سربراہ نعیم خان، لبریشن فرنٹ چیئرمین فاروق ڈار عرف بٹہ کراٹے اور تحریک حریت لیڈر غازی جاوید بابا کے خلاف باضابطہ طور پر مقدمہ درج کرلیا تھا۔

TOPPOPULARRECENT