Tuesday , December 11 2018

این آر آئیز تلنگانہ کے برانڈ ایمبسیڈرس ،وزیر صنعت تلنگانہ کے ٹی آر کا بیان

حیدرآباد ۔ 22 ۔ جنوری : ( سیاست نیوز ) : وزیر صنعت تلنگانہ کے ٹی آر نے این آر آئیز کو تلنگانہ کے بڑانڈ ایمبسیڈرس قرار دیتے ہوئے انہیں تحریک تلنگانہ میں جو رول ادا کیا تھا ۔ وہی رول سنہرے تلنگانہ کی تعبیر کے لیے ادا کرنے کا مشورہ دیا ۔ آج سوئیزرلینڈ کے شہر جیورچ میں تلنگانہ کے این آر آئیز سے خطاب کرتے ہوئے کے ٹی آر نے کہا کہ مختصر عرصے میں چیف منسٹر کے سی آر نے تمام شعبوں میں تلنگانہ کو سرفہرست کردیا ہے ۔ مرکزی وزراء کے بشمول مختلف ریاستوں کی جانب سے کے سی آر کی سیاسی بصیرت کی ستائش کی جارہی ہے ۔ پڑوسی ریاستوں کے عوام وہاں بھی ٹی آر ایس پارٹی تشکیل دینے کا مطالبہ کررہے ہیں ۔ حکومت کی اسکیمات و پالیسیوں پر کے ٹی آر نے تین گھنٹوں تک روشنی ڈالی ، انہوں نے کہا کہ تشکیل ریاست کے بعد تلنگانہ بحران سے نکل کر ترقی کے راستے پر گامزن ہوگیا ۔ 15 سال قبل تشکیل پائی ریاستوں نے بھی وہ ترقی نہیں کی جو تلنگانہ ریاست نے کی ہے ۔ صرف ساڑھے تین سال کے دور حکومت میں تلنگانہ ملک کی دوسری ریاستوں کے لیے مثالی ریاست میں تبدیل ہوگئی ہے ۔ تلنگانہ عوام کی امیدوں اور امنگوں کو پورا کرنے کے اقدامات کئے جارہے ہیں ۔ کے سی آر کی قیادت میں سنہرے تلنگانہ کا نشانہ بھی عبور کرلیا جائے گا ۔ تلنگانہ تحریک کی مخالفت کرنے والے بھی آج تلنگانہ کی ستائش کررہے ہیں ۔ اس سے تلنگانہ کی ترقی کا اندازہ ہوتا ہے ۔ کے ٹی آر نے کہا کہ ریاست کی تقسیم پر تلنگانہ تاریک میں ڈوب جانے کا متحدہ آندھرا پردیش کی نمائندگی کرنے والے کانگریس کے آخری چیف منسٹر کرن کمار ریڈی نے دعویٰ کیا تھا ۔ علحدہ تلنگانہ ریاست کی تشکیل کے بعد تلنگانہ عوام کو ( پاور ) برقی کے مسائل سے چھٹکارا مل گیا ہے ۔ مگر کانگریس پارٹی پاور سے محروم ہوگئی صرف تلنگانہ میں ہی نہیں بلکہ سارے ملک میں کانگریس کا پاور فیل ہوچکا ہے ۔ جس کی وجہ سے زرعی شعبہ کو 24 گھنٹے برقی سربراہ کرنے کی کانگریس مخالفت کررہی ہے ۔ ٹی آر ایس حکومت عوام کے بنیادی مسائل پر خصوصی توجہ دے رہی ہے ۔ بالخصوص شہر حیدرآباد کے عوام کو بنیادی سہولتوں کی فراہمی سڑکوں کی تعمیرات پینے کے پانی کی سربراہی کو یقینی بنانے کے اقدامات کئے جارہے ہیں ۔ تلنگانہ کی ترقی کو سرحدوں کے پار پہونچانے کے لیے انہوں نے این آر آئیز کو موثر رول ادا کرنے کا مشورہ دیا ۔ تلنگانہ کا ہر ایک این آر آئی ریاست تلنگانہ کا ایک گڈول ایمبسیڈر اور برانڈ ایمبسیڈر ہونے کا دعویٰ کیا ۔ کے ٹی آر نے ریاست میں سرکاری و خانگی سرمایہ کاروں اور تلنگانہ کے درمیان پل کا کام کرنے کا این آر آئیز کو مشورہ دیا ۔ خطاب کے بعد این آر آئیز کے سوالات کے کے ٹی آر نے تفصیلی جوابات دئیے ۔ سرکاری اسکولس کو فروغ دینے کے لیے حکومت کی جانب سے کئے جانے والے اقدامات پر روشنی ڈالی ۔ انہوں نے این آر آئیز کو تلنگانہ میں بغیر کسی ڈر و خوف کے اراضیات خریدنے کا مشورہ دیا ۔ اراضی سروے کی تکمیل کے بعد تمام ریکارڈ کو آن لائن سے مربوط کرنے کے فیصلے سے واقف کرایا ۔ تالابوں کے احیاء ، شہر حیدرآباد میں لا اینڈ آرڈر کی برقراری ، ماحولیاتی آلودگی کے خاتمے کی جدوجہد ، اسپورٹس کی حوصلہ افزائی کے سوالات کابھی جواب دیا ۔۔

TOPPOPULARRECENT