Friday , December 15 2017
Home / شہر کی خبریں / این آر آئیز کی فلاح و بہبود کے لیے بجٹ مختص کیا جائے

این آر آئیز کی فلاح و بہبود کے لیے بجٹ مختص کیا جائے

حیدرآباد میں سعودی قونصل خانہ قائم کرنے کی اپیل ، راونڈ ٹیبل کانفرنس میں مسائل کا جائزہ
حیدرآباد ۔ 20 ۔ جون : ( سیاست نیوز ) : تلنگانہ حکومت کی مجوزہ این آر آئی پالیسی سے متعلق منعقدہ گول میز کانفرنس کے مقررین نے ریاستی حکومت سے اپیل کی کہ وہ غیر مقیم ہندوستانیوں کے مسائل سے نمٹنے کے لیے ایک خصوصی محکمہ قائم کرے اور این آر آئیز کی فلاح و بہبود کے لیے بجٹ مختص کرے ۔ سابق سفارت کار ڈاکٹر بی ایم ونود کمار ، پروفیسر ایم وینکٹیشور راؤ ، پروفیسر اے کملاکر ریڈی ، تلنگانہ این آر آئی امور کے عہدیدار ای چٹی بابو بورڈ ٹرسٹی امریکن تلنگانہ اسوسی ایشن وینکٹ منتھنا ، ملایشیا تلنگانہ اسوسی ایشن کے صدر سائی پدم تروپتی نے تلنگانہ کے این آر آئیز کے مسائل پر اظہار خیال کیا ۔ قطر سعودی عرب اور کویت میں تلنگانہ انجمنوں کے نمائندوں مرلی راجہ راجو ، امجد حسین اور سی ایچ چندر شیکھر اور دوسروں نے بھی مخاطب کیا ۔ مقررین نے کے ٹی راما راؤ کو تلنگانہ این آر آئیز کا انچارج وزیر بنانے کا خیر مقدم کیا ۔ بتایا گیا کہ سعودی عرب متحدہ عرب امارات ، سلطنت عمان ،بحرین ، قطر ، کویت ، سنگاپور ، ملایشیا ، افغانستان ، لیبیا اور دوسرے ممالک میں تلنگانہ سے تعلق رکھنے والے تقریبا دس لاکھ ورکرز کام کررہے ہیں اور وہ ہر ماہ اپنے وطن کو ایک ہزار کروڑ روپئے بیرونی زر مبادلہ بھیج رہے ہیں ۔ مقررین نے کے سی آر حکومت کو مشورہ دیا کہ این آر آئی سیل کے کام کاج سکریٹریٹ سے باہر منتقل کئے جائیں تاکہ عوام کی اس تک رسائی ہوسکے ۔ کانفرنس میں مرکز سے مطالبہ کیا گیا کہ خلیجی ممالک میں ہندوستانی سفارت خانوں میں تلگو داں عہدیدار مقرر کیے جائیں اور سعودی عرب سے خواہش کی جائے کہ وہ حیدرآباد میں اپنا قونصل خانہ قائم کرے ۔۔

TOPPOPULARRECENT