Sunday , December 17 2017
Home / ہندوستان / ایودھیا میں سخت سکیورٹی کے درمیان رام نومی کا جشن

ایودھیا میں سخت سکیورٹی کے درمیان رام نومی کا جشن

ملک کے مختلف حصوں میں جلوس کے موقع پر گڑبڑ ۔ بہار میں تصادم ، بوکارو میں کرفیو نافذ
فیض آباد ، 15 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) رام نومی کا تہوار آج ایودھیا میں روایتی جوش و خروش اور خوشی کے ساتھ منایا گیا جبکہ ہزاروں بھکتوں نے مندروں کا رُخ کیا اور دریا ساریو میں مقدس ڈُبکی لگائی۔ تاہم ملک کے چند حصوں میں رام نومی جلوس کے موقع پر گڑبڑ اور جھڑپ کے واقعات پیش آئے۔ بہار کے ضلع گوپال گنج میں دو گروپوں کے درمیان تصادم ہوا جس کے نتیجے میں کم از کم چار افراد زخمی ہوئے۔ جھارکھنڈ کے ہزاری باغ میں اسی طرح جلوس کے موقع پر جھڑپ میں 12 افراد کو زخم آئے جبکہ اسی ریاست کے شہر بوکارو میں تو چار پولیس اسٹیشنس کے حدود میں آج جلوس کے دوران گڑبڑ کے نتیجے میں کرفیو لاگو کردینا پڑا۔ بہار کے گوپال گنج میں میر گنج پولیس اسٹیشن کے تحت مراچویا گاؤں میں عوام کے دو گروپوں کے درمیان تصادم ہوا۔ میر گنج پولیس اسٹیشن کے انچارج اچھے لعل سنگھ یادو نے کہا رام نومی کا جلوس ایک مسجد کے قریب سے گزر رہا تھا کہ جھڑپ اس وقت شروع ہوئی

جب ایک طبقہ کے افراد نے جلوس پر سنگباری کی۔ جلوس میں شامل افراد نے بھی جوابی کارروائی کی جس کے ساتھ ہی عوام کے دوگروپوں کے درمیان بڑے پیمانے پر سنگباری ہونے لگی جو تصادم میں تبدیل ہوگئی، جس کے نتیجہ میں کم سے کم چار افراد زخمی ہوگئے۔ جھارکھنڈ کے بوکارو سٹی میں بھی رام نومی جلوس پر سنگباری کا دعویٰ کیا گیا، جس کے نتیجے میں ایک مجسٹریٹ اور چار پولیس ملازمین کے بشمول 19 افراد زخمی ہوئے۔ ڈپٹی کمشنر آر ایم پاترے نے کہا کہ شہر کے چار پولیس اسٹیشن حدود میں کرفیو نافذ کردیا گیا ہے۔ انھوں نے بتایا کہ صورتحال پر قابو پانے کیلئے پولیس کو لاٹھی چارج کرنا پڑا اور آنسو گیس کے شل بھی استعمال کئے گئے۔ دریں اثناء جھارکھنڈ کے ہی ہزاری باغ میں بھی اسی طرح کے واقعہ میں 12 افراد زخمی ہوئے۔ ڈی آئی جی (نارتھ چھوٹا ناگپور رینج) اوپیندر کمار نے کہا کہ جھڑپ کے دوران کئی مکانات اور تین گاڑیوں کو نذر آتش کیا گیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT