Saturday , July 21 2018
Home / Top Stories / ایک او رچھوٹا قطب مینار جس کے متعلق بہت سارے لوگ نہیں جانتے

ایک او رچھوٹا قطب مینار جس کے متعلق بہت سارے لوگ نہیں جانتے

نئی دہلی۔اس کو چھوٹا قطب مینار بھی کہاجاتا ہے‘ مگر17ویں صدی کی اس مینار جو مغربی دہلی کے ایک گاؤں میں ہے اس کی ناتو حفاظت کی گئی اورنہ ہی آرکیالوجیکل اہمیت کو فروغ دیا ہے۔

یقیناًاگر کوئی اتم نگر کے ہستا سل گاؤں میں اس مینار کو دیکھنا چاہئے تو اس کے لئے یہ مشکل امر ہوگا کیونکہ مذکورہ مینار کے چاروں طرف اس قدر تعمیری سرگرمیاں انجام دی گئی ہیں کہ راستہ تنگ ہوگیا ہے۔

اگرچکہ کے اس کے تحفظ میں دیر ہوگئی ہے ‘ انٹیک کے دہلی چیاپٹر اور دہلی حکومت کے ارکیالوجی محکمہ نے اب جاکے فیصلہ لیا ہے کہ اس کو اپنی تحت لے گی۔

مذکورہ ٹاؤ ر کو مغل حکمراں شاہجہاں نے اپنے شکارگاہ کے طور پر تعمیر کیاتھا‘ جس کے پانچ میں تین منزل ہی اب باقی نہیں‘ یہ ساوتھ دہلی میں تعمیر جیسے قطب مینار سے کافی ملتا جھلتا ہے‘ ہستاسل کا یہ تعمیر شاہکار نہایت ابتر حالت میں ہے۔

گریڈ اے میں ہرٹیج اہمیت میں شامل کرنے کے لئے چھوٹے قطب مینار کو دہلی حکومت کے پراجکٹ فیس چہارم کے تحت لاکر درالحکومت کا معروف شاہکار بنایاجائے گا۔

عہدیداروں نے بتایا کہ جائزہ لینے کے بعد بہت جلد اس عمارت کی بازیابی کا کام شروع کیاجائے گا۔خستہ حال مینار پر پتھرکی کاریگری ‘ اور اینٹوں کی استر کاری جو سرخ ریتیلی پتھر پر مشتمل ہے کے ذریعہ اس کی کمیکل صفائی عمل میں لائی جائے گی۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ مذکورہ قطب مینار پانچ منزلوں پر مشتمل عمارت پر تھا جس کے چھت پر ایک گنبد تعمیرکیاگیاتھا۔ سمجھا جارہا ہے کہ اٹھارویں صدی میں اوپر کی دوعمارتیں اور گنبد مہندم ہوگیاتھا۔

وہیں نچلی منزلوں پر گاؤں والوں نے قبضہ کرلیاتھا‘ دیگر پلیٹ فارم پر خستہ حالی کا شکار ہیں اور اوپری منزل پر جانے والی سیڑھیاں کئی سال قبل ہی غائب ہوگئی ہیں۔

TOPPOPULARRECENT