Monday , September 24 2018
Home / Top Stories / ایک لاکھ74 ہزار کروڑ کا مجموعی بجٹ ،اقلیتوں کیلئے صرف 2000 کروڑ مختص

ایک لاکھ74 ہزار کروڑ کا مجموعی بجٹ ،اقلیتوں کیلئے صرف 2000 کروڑ مختص

ٹی آر ایس کا الیکشن بجٹ
ریاستی حکومت کمزور طبقات ، خواتین، سرکاری ملازمین کو خوش کرنے میں مصروف، وزیر فینانس کی بجٹ تقریر

حیدرآباد ۔ 15 ۔مارچ (سیاست نیوز) ٹی آر ایس حکومت نے عام انتخابات سے قبل اپنے آخری بجٹ میں فلاحی اسکیمات اور ترقی پر ساری توجہ مرکوز کرتے ہوئے سماج کے مختلف طبقات کی تائید حاصل کرنے کی کوشش کی ہے۔ وزیر فینانس ای راجندر نے قانون ساز اسمبلی میں سالانہ بجٹ برائے مالیاتی سال 2018-19 پیش کیا۔ ایک لاکھ 74 ہزار 453 کروڑ ، 84 لاکھ پر بجٹ میں حکومت کی ترجیحی اسکیمات کیلئے زائد رقومات منظور کی گئی ہے۔ کسان ، خواتین ، درج فہرست اقوام و قبائل ، اقلیت، سرکاری ملازمین ، بیروزگار نوجوان اور دیگر شعبہ جات کو مطمئن کرنے کی کوشش کی گئی اور بجٹ میں اضافہ کرتے ہوئے کے سی آر حکومت نے آئندہ انتخابات کی تیاریوں کا اشارہ دے دیا ہے۔ تلنگانہ کا بجٹ فلاحی اقدامات و ترقی سے متعلق چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ کے ویژن کی عکاسی کرتا ہے۔ ایک لاکھ 74 ہزار 453 کروڑ کے جملہ مصارف کا تخمینہ کیا گیا۔ اس میں آمدنی مصارف ایک لاکھ 25 ہزار 454 کروڑ 70 لاکھ جبکہ سرمایہ مصارف 33 ہزار 369 کروڑ ہیں۔ سرمایہ مصارف ، جملہ مصارف کا 19 فیصد ہے اور دیگر ریاستوں کے مقابلہ یہ قابل لحاظ اضافہ ہے۔ 2018-19 ء میں آمدنی وصولیات کا تخمینہ 73 ہزار 751 کروڑ 88 لاکھ مقرر کیا گیا ہے۔ 2017-18 ء سے تقابل کیا جائے تو آمدنی میں 20 فیصد اضافہ کی تجویز ہے۔ 2017-18 ء کے مطابق مرکز سے 26,857 کروڑ کی منتقلی کا اندازہ کیا گیا جبکہ 2018-19 ء میں مرکز سے 29,041 کروڑ کی وصولی کا امکان ہے۔ بجٹ میں کہا گیا کہ مختلف کارپوریشن اور سرکاری پروگراموں پر عمل آوری قرض کے ذریعہ فنڈس حاصل کرتے ہوئے کر رہے ہیں، لہذا جملہ مصارف موازنہ تجویز کردہ اخراجات سے کہیں زیادہ ہوگا۔ 2018-19 ء میں 5520.41 کروڑ کی آمدنی کا تخمینہ ہے جبکہ مالیاتی خسارہ 29077.07 کروڑ رہے گا۔ بجٹ میں سب سے زیادہ حصہ داری آبپاشی کی ہے۔ 25,000 کروڑ کے ذریعہ آبپاشی پراجکٹس کی تکمیل کا منصوبہ ہے اور حکومت کالیشورم پراجکٹ کو اندرون دو سال مکمل کرنے کا عزم رکھتی ہے۔ کسانوں کو دو ایکر کیلئے 8,000 روپئے کی امدادی اسکیم پر عمل آوری کیلئے 12,000 کروڑ مختص کئے گئے ۔ کسانوں کیلئے 5 لاکھ روپئے انشورنس اسکیم کا اعلان کیا گیا جس کیلئے 500 کروڑ مختص کئے گئے ۔ حکومت نے مشن کاکتیہ ، مشن بھگیرتا کے علاوہ ایس سی، ایس ٹی ، بی سی اور اقلیتی بہبود کے بجٹ میں اضافہ کیا ہے۔ وزیر فینانس ای راجندر نے 68 صفحات پر مشتمل بجٹ تقریر میں حکومت کے کارناموں کا تفصیل سے احاطہ کیا۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT