Tuesday , September 18 2018
Home / شہر کی خبریں / اے آئی سی سی اور تلنگانہ پی سی سی میں بڑے پیمانے پر تبدیلیوں کا امکان

اے آئی سی سی اور تلنگانہ پی سی سی میں بڑے پیمانے پر تبدیلیوں کا امکان

حیدرآباد /4 جون (سیاست نیوز) کانگریس کی شکست پر ہائی کمان فکر مند ہے۔ سونیا گاندھی پارلیمنٹ سیشن کے بعد اے آئی سی سی کے ساتھ تلنگانہ کانگریس میں بھی بڑے پیمانے پر تبدیلی لانے سنجیدگی سے غور کر رہی ہیں۔ واضح رہے کہ عام انتخابات میں کانگریس کو بہت بڑی شکست ہوئی ہے۔ ایمرجنسی کے بعد بھی کانگریس کو ایسی صورت حال سے دوچار نہیں ہونا پڑا تھا۔

حیدرآباد /4 جون (سیاست نیوز) کانگریس کی شکست پر ہائی کمان فکر مند ہے۔ سونیا گاندھی پارلیمنٹ سیشن کے بعد اے آئی سی سی کے ساتھ تلنگانہ کانگریس میں بھی بڑے پیمانے پر تبدیلی لانے سنجیدگی سے غور کر رہی ہیں۔ واضح رہے کہ عام انتخابات میں کانگریس کو بہت بڑی شکست ہوئی ہے۔ ایمرجنسی کے بعد بھی کانگریس کو ایسی صورت حال سے دوچار نہیں ہونا پڑا تھا۔ کانگریس نے سیما۔ آندھرا میں نقصان کا اندازہ کرتے ہوئے تلنگانہ میں کامیابی کی امید پر تلنگانہ ریاست تشکیل دی تھی، مگر تلنگانہ میں بھی کانگریس کا مایوس کن مظاہرہ رہا، اس لئے مسز گاندھی کی جانب سے تلنگانہ پردیش کانگریس میں بھی بڑے پیمانے پر ردوبدل کا امکان ہے۔

انتخابات سے قبل پنالہ لکشمیا کو صدر اور اتم کمار ریڈی کو معاون صدر نامزد کرتے ہوئے تمام سینئر قائدین کو بحیثیت ارکان شامل کیا گیا تھا، تاہم اب پارلیمنٹ اجلاس کے بعد تلنگانہ پردیش کانگریس کے لئے عاملہ تشکیل دینے کا امکان ہے، جس میں نائب صدور اور جنرل سکریٹریز وغیرہ شامل رہیں گے۔ دریں اثناء کانگریس کے جنرل سکریٹری و انچارج آندھرا پردیش کانگریس امور ڈگ وجے سنگھ نے کہا کہ کانگریس نے علحدہ تلنگانہ ریاست تشکیل دی، مگر وہ عوامی اعتماد حاصل کرنے میں ناکام رہی۔ انھوں نے کہا کہ ماہ جون کے اواخر میں تلنگانہ کانگریس قائدین کا دوروزہ اجلاس طلب کرکے شکست کی وجوہات کا جائزہ لیا جائے اور مستقبل کی حکمت عملی تیار کی جائے گی۔ انھوں نے بتایا کہ کئی کانگریس قائدین پارٹی کی شکست کی وجوہات پر مبنی رپورٹ ہائی کمان کو پیش کرچکے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT