Monday , June 25 2018
Home / شہر کی خبریں / اے پی اسمبلی میں وائی ایس آر کانگریس کی تحریک التواء نوٹس مسترد

اے پی اسمبلی میں وائی ایس آر کانگریس کی تحریک التواء نوٹس مسترد

حکومت پر کسانوں کے مسائل پر فراری اختیار کرنے کا الزام ، وائی ایس جگن قائد اپوزیشن کی برہمی

حکومت پر کسانوں کے مسائل پر فراری اختیار کرنے کا الزام ، وائی ایس جگن قائد اپوزیشن کی برہمی
حیدرآباد ۔ 9 ۔ مارچ : ( سیاست نیوز ) : حکومت کسانوں کے مسائل پر مباحث سے فرار اختیار کررہی ہے ۔ قائد اپوزیشن آندھرا پردیش اسمبلی مسٹر وائی ایس جگن موہن ریڈی نے وائی ایس آر کانگریس کی جانب سے پیش کردہ تحریک التواء نوٹس کو مسترد کئے جانے پر سخت برہمی کا اظہار کرتے ہوئے یہ بات کہی ۔ وائی ایس آر کانگریس کی جانب سے تحریک التواء نوٹس اسپیکر کو پیش کرتے ہوئے کسانوں کے مسائل اور کسانوں کی خود کشی کے واقعات کی جانب توجہ مبذول کروانے کی کوشش کی گئی جسے اسپیکر مسٹر کوڈیلا شیوا پرساد نے مسترد کردیا ۔ آندھرا پردیش اسمبلی کی کارروائی کے آغاز کے ساتھ ہی وائی ایس آر کانگریس نے کسانوں کی خود کشی کے مسئلہ پر مباحث کا مطالبہ کرتے ہوئے ہنگامہ آرائی شروع کردی اور ایوان کے وسط میں پہنچ کر احتجاج کرنے لگے ۔ اس احتجاج کے دوران حکومت کی جانب سے تیقنات اور ایوان کی کارروائی کو پرسکون انداز میں چلنے دینے کی بھی اپیل نظر انداز کرتے ہوئے مباحث کا مطالبہ کرتے رہے ۔ مسٹر وائی ایس جگن موہن ریڈی نے ایوان میں اپنے خطاب کے دوران حکومت پر الزام عائد کیا کہ حکومت عوامی مسائل پر مباحث سے فرار اختیار کررہی ہے ۔ انہوں نے اس دوران دھرما ورم میں 9 کسانوں کی خود کشی کے واقعہ کا تذکرہ کیا ۔ خطاب کے دوران اسپیکر اسمبلی مسٹر کوڈیلا شیوا پرساد کی جانب سے جگن موہن ریڈی کا مائیک بند کردئیے جانے پر بھی انہوں نے ناراضگی کا اظہار کیا ہے ۔ جگن موہن ریڈی نے حکومت کی جانب سے بجٹ سیشن کے ایام میں تخفیف کرتے ہوئے اسے 17 یوم تک محدود کئے جانے پر بھی اعتراض کرتے ہوئے کہا کہ حکومت کی جانب سے 40 یوم کے سیشن کو 17 یوم تک محدود کئے جانے سے کئی مسائل پر مباحث کا موقع میسر نہیں آئے گا ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کو چاہئے کہ وہ بتائے کہ آخر کب فیس باز ادائیگی ، ڈاکرا لون ، کسانوں کے علاوہ دیگر اہم موضوعات پر مباحث منعقد کئے جائیں گے ۔۔

TOPPOPULARRECENT