Wednesday , December 19 2018

اے پی این جی اوز ہاؤزنگ سوسائٹی میں غبن، حاطیوں کو گرفتار کرنے کا مطالبہ

متاثرہ ارکان کو رقم واپس کرنے کا مطالبہ، حیدرآباد تلنگانہ این جی اوز اسوسی ایشن کا بیان

متاثرہ ارکان کو رقم واپس کرنے کا مطالبہ، حیدرآباد تلنگانہ این جی اوز اسوسی ایشن کا بیان
حیدرآباد ۔ 20 ڈسمبر (سیاست نیوز) حکومت تلنگانہ کو چاہئے کہ وہ فوری طور پر اے پی این جی اوز (گچی باؤلی) ہاؤزنگ سوسائٹی کے ممبرس سے وصول کئے گئے 18 کروڑ روپئے کی رقم کے مبینہ غبن کے واقعہ میں ملوث وی گوپال ریڈی، این چندراشیکھر ریڈی، پی اشوک بابو اور دیگر کو گرفتار کرتے ہوئے ان کے قبضہ سے غبن شدہ رقم کو حاصل کرکے متاثرہ ممبران کو ادا کرتے ہوئے خاطیوں کو کیفرکردار تک پہنچایا جائے۔ علاوہ ازیں اے پی این جی اوز ہاؤزنگ سوسائٹی کی منسوخی کا اعلان کیا جائے اور ساتھ ہی ساتھ قانون تقسیم آندھراپردیش کے تحت اے پی این جی اوز بھون کی تقسیم عمل میں لاتے ہوئے بلڈنگ کے 42 فیصد حصہ کو حیدرآباد تلنگانہ این جی اوز اسوسی ایشن کے حوالے کیا جائے بصورت دیگر بڑے پیمانے پر احتجاجی مظاہرے منظم کئے جائیں گے۔ ان خیالات کا اظہار آج یہاں صدر حیدرآباد تلنگانہ این جی اوز اسوسی ایشن مسٹر ایم ستیہ نارائنا گوڑ اور سکریٹری اسوسی ایشن مسٹر پی بلرام پریس کانفرنس کو مخاطب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے بتایا کہ مذکورہ قائدین نے گچی باؤلی میں اے پی این جی اوز ہاؤزنگ سوسائٹی کے نام پر سینکڑوں ملازمین سے رقومات وصول کرکے زائد از 18 کروڑ روپئے کا غبن کرلیا جس کے نتیجہ میں ہاؤزنگ سوسائٹی کے ممبران کو تاہم نہ مکان حاصل ہوا اور نہ ہی انہیں رقم واپس کی گئی بلکہ کروڑوں روپئے غبن کرلئے گئے۔ اسی طرح سے علحدہ ریاست تلنگانہ کے قیام کے اعلان کے بعد سے تاہم تقسیم ریاست آندھراپردیش ایکٹ کے تحت اے پی این جی اوز بھون کی تقسیم عمل میں نہیں لائی گئی جس کے نتیجہ میں تلنگانہ این جی اوز کو کافی دشواریوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ انہوں نے حکومت سے پرزور مطالبہ کیا کہ وہ اے پی این جی اوز ہاؤزنگ سوسائٹی کو فوری منسوخ کرتے ہوئے اس سوسائٹی کی رقم کے غبن میں ملوث خاطیوں کے خلاف سخت قانونی کارروائی کرے اور اے پی این جی اوز بھون کی تقسیم عمل میں لانے سے متعلق ضروری اقدامات کرے۔ اس موقع پر اسوسی ایٹ صدر حیدرآباد تلنگانہ این جی اوز اسوسی ایشن مسٹر ایس پربھاکر ریڈی، نائب صدور مسرز پی سیتاراما راؤ، جی ملاریڈی، اے سرینواس، جوائنٹ سکریٹریز مسرز کیشیا نائیک، پی سریدھر ریڈی، جی راجیشور راؤ، آر ایل سرینواس بھی موجود تھے۔

TOPPOPULARRECENT