Friday , December 15 2017
Home / کھیل کی خبریں / بابرکی ریکارڈ سنچری ‘پاکستان کی سیریز میں کامیاب واپسی

بابرکی ریکارڈ سنچری ‘پاکستان کی سیریز میں کامیاب واپسی

گیانا۔10 اپریل (سیاست ڈاٹ کام ) پاکستان نے بابر اعظم اور حسن علی کی عمدہ کارکردگی کی بدولت ویسٹ انڈیز کو دوسرے ونڈے میں 74 رنز سے شکست دے کر سیریز 1-1 سے برابر کردی۔گیانا کے پراویڈنس اسٹیڈیم میں کھیلے گئے میچ میں ٹاس جیت کر ویسٹ انڈیز نے پاکستان کو بیٹنگ کی دعوت دی تو ابتدا میں بولنگ کیلئے سازگار وکٹ پر پاکستانی اوپنرز مستقل مشکلات سے دوچار نظر آئے اور رنز بنانے میں انہیں جدوجہد کا سامنا کرنا پڑا۔ احمد شہزاد پانچ رنز بنا کر پویلین لوٹے تو بابر اعظم اور کامران اکمل نے اسکور کو 44 تک پہنچا دیا۔ایک ایسے موقع پر جب دونوں کھلاڑی وکٹ پر جمتے نظر آ رہے تھے، کامران اکمل اپنے ساتھی اوپنر کی طرح لیگ کی جانب جاتی گیند کو چھیڑنے کی پاداش میں وکٹ کیپر کے ہاتھوں کیچ ہو کر پویلین لوٹ گئے۔اس مشکل مرحلے پر محمد حفیظ وکٹ پر آئے اور بابر کے ساتھ تیسری وکٹ کیلئے 69 رنز جوڑ کر ابتدائی نقصان کا ازالہ کرنے کی کوشش کی لیکن حفیظ ایک مرتبہ پھر 50 گیندوں پر محیط 32 رنز کی سست رفتار باری کھیلنے کے بعد آؤٹ ہوئے۔ جبکہ شعیب ملک کی اننگز بھی نو رنز پر تمام ہوئی۔کپتان سرفراز احمد نے رنز بنانے کی رفتار میں اضافہ کیا اور 55 رنز کی ساجھے داری قائم کر کے ایک بڑے اسکور کی امید پیدا کی لیکن وہ بھی 26 رنز بنانے بعد حریف کپتان کو کیچ دیا۔اس موقع پر پاکستانی ٹیم مشکلات سے دوچار نظر آڑہی تھی اور ایسا محسوس ہورہا تھا کہ شاید مہمان ٹیم 250 رنز کا مجموعہ بھی حاصل نہ کر سکیں۔عماد وسیم وکٹ پر بابر اعظم کا ساتھ نبھانے پہنچے تو شروع میں انہیں مشکلات کا سامنا کرنا پڑا لیکن پھر انہوں نے اپنے ساتھی کا ساتھ نبھاتے ہوئے ایک شاندار شراکت قائم کی۔بابر اعظم نے کیریئر کے 25ویں ونڈے میں پانچویں سنچری بنا کر ایک مرتبہ اپنی صلاحیتوں کا بھرپور انداز میں اظہار کیا۔پاکستان نے اختتامی پانچ اوورز میں دونوں کھلاڑیوں کی جارحانہ بیٹنگ کی بدولت 62 رنز سمیت 99 رنز کی ناقابل شکست شراکت قائم کر کے 282 رنز کا قابل قدر مجموعہ اسکور بورڈ پر سجایا۔بابر اعظم نے تین چھکوں اور سات چوکوں کی مدد سے کیریئر کی بہترین 125 رنز کی ناقابل شکست انگز کھیلی جبکہ عماد نے دو چھکوں اور دو چوکوں کی مدد سے 43 رنز بنائے۔ویسٹ انڈیز نے بیٹنگ شروع کی تو پاکستانی بولرز کی جارحانہ حکمت عملی کے سبب انہیں ابتدا سے ہی مشکلات کا سامنا کرنا پڑا اور 56 رنز پر آدھی ٹیم پویلین لوٹ چکی تھی۔چیڈوک والٹن10، ایون لوئس13، شے ہوپ15، کیرن پاول 11 اور گزشتہ میچ کے ہیرو جیسن محمد ایک رن بنانے کے بعد آوٹ ہوئے۔اس موقع پر کارٹر کا ساتھ نبھانے کپتان ہولڈر آئے لیکن دونوں نے اسکور کو 75 تک پہنچایا ہی تھا کہ کارٹر کو حفیظ کی گیند پر ایل بی ڈبلیو قرار دے دیا گیا۔75 رنز چھ وکٹیں گرنے کے بعد امید تھی کہ پاکستان جلد ہی ویسٹ انڈین ٹیم آوٹ کر دے گا لیکن ویسٹ انڈیز کے کپتان پاکستانی بولرز کی راہ میں حائل ہو ئے۔انہوں نے ایشلے نرس کے ساتھ 58 رنز جوڑے خصوصاً نرس کا انداز جارحانہ تھا جنہوں نے 43 گیندوں پر 44 رنز بنائے لیکن اس سے قبل کہ یہ شراکت کسی خطرے کا سبب بنتی، حسن علی نے پاکستان کو اہم کامیابی دلا کر نرس کو پویلین کی راہ دکھا دی۔ہولڈر دوسرے سرے سے کوشش کرتے رہے لیکن میزبان ٹیم 208 رنز پر پویلین لوٹ گئی، ہولڈر نے 68 رنز کی جرات مندانہ اننگز کھیلی۔پاکستان کی جانب سے حسن علی نے عمدہ بولنگ کا مظاہرہ کرتے ہوئے 38 رنز کے عوض پانچ وکٹیں لیں جبکہ محمد حفیظ نے بھی دو وکٹیں حاصل کیں۔بابر اعظم کو شاندار سنچری پر میچ کا بہترین کھلاڑی قرار دیا گیا۔دونوں ٹیموں کے درمیان سیریز کا فیصلہ کن میچ آج کھیلا جائے گا۔

TOPPOPULARRECENT