Saturday , December 15 2018

بابری مسجد کی بات کرنے والے پہلے گھر کی ویران مساجد آباد کریں

کاروان میں اوقافی جائیدادوں پر قبضوں سے عوام میں برہمی ، عثمان الہاجری کا خطاب
حیدرآباد ۔ 26 نومبر ( سیاست نیوز) ریاست تلنگانہ کے اقتدار سے فرقہ پرستوں کے حامیوں کو ہٹا دیا جائے گا ۔ یہ بات حلقہ اسمبلی کاروان مہاکوٹمی کے کانگریسی امیدوار عثمان بن محمد الہاجری نے بتائی ۔ انہوں نے آج یہاں تالہ گڈہ شجاع کالج کے قریب منعقدہ انتخابی جلسہ کو مخاطب کیا اور کہا کہ شکست کے خوف سے ان پر بے بنیاد الزامات عائد کئے جارہے ہیں ۔ انہوں نے گذشتہ روز 25لاکھ روپئے کے الزام میں اس شخص نرسنگ راؤ کو عوامی اجلاس میں پیش کردیا اور مخالفین کو سخت جواب دیا اور کہا کہ بابری مسجد کی بات کرنے والی جماعت کو چاہیئے کہ وہ شہر کی ویران مساجد کو آباد کرنے کی کوشش کریں ۔ انہوں نے افسوس ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ جماعت کے صدر بابری مسجد کی بات کرتے ہیں جبکہ ان ہی کی ایما پر کاروان کے درجنوں مساجد کو ویران کردیا گیا ۔ قیمتی اوقافی جائیدادوں پر ناجائز قبضہ کرلئے گئے ۔ عثمان الہاجری نے مسجد چندا صاحب کی داستان عوام میں پیش کی اور مسجد کی چند تصاویر کو عوام میں تقسیم کرتے ہوئے سب کو حیرت میں ڈال دیا ۔ مسجد کی ان تصاویر کو دیکھ کر عوامی برہمی پیدا ہوگئی اور انہوں نے عثمان الہاجری کا بھرپور ساتھ دینے کا اعلان کیا ۔ عثمان الہاجری نے اس موقع پر اپنی تقریر کو جاری رکھتے ہوئے کہا کہ ان کے شاگرد سرحد پر ملک کے دشمنوں کے خلاف جنگ کررہے ہیں تو وہ ملک کے اندر چھپے ہوئے دشمنوں کے خلاف جنگ لڑرہے ہیں ۔ ( سلسلہ صفحہ 8 پر)

TOPPOPULARRECENT