بابری مسجد کی جگہ پررام مندر تعمیر نہیں کی جاسکتی

بی جے پی ملک کوکمزور کر رہی ہے ‘ شیوپال یادو کی جن آکروش ریالی
لکھنو ۔ 9 ؍ ڈسمبر ( سیاست ڈاٹ کام) شیوپال یادو نے کہا کہ سپریم کورٹ کو کہیں بھی نظر انداز نہیں کیا جاتا چاہئے ‘اگر مندر بنانا ہے تو سرجو کے کنارے کہیں زمین تلاش کرلو ۔ حکومت کے پاس زمین کی کمی نہیں ہوتی ۔ سماج وادی سیکولر مورچہ ۔ لوہیا کے صدر شیوپال سنگھ یادو نے بی جے پی پر ملک کو کمزور کرنے کا الزام لگاتے ہوئے رام مندر سے متعلق ایک اہم بیان دیا ہے ۔انہوں نے کہاکہ بابری مسجد کی جگہ پر رام مندر نہیں بننی چاہئے ۔ شیوپال یادو نے اپنی نو تشکیل شدہ سیاسی پارٹی کے پہلی ’جن اکروش ریالی‘ میں یہاںرمابائی میدان میں طاقت کا مظاہرہ کرتے ہوئے کہا کہ بابری مسجد کی جگہ پر رام مندر نہیں بننی چاہئے ۔ انہوںنے کہا کہ میرا سیدھا ماننا ہے کہ سپریم کورٹ کو کہیں بھی نظرانداز نہیں کیا جانا چاہئے ۔اگر مندر بنانا ہے تو سر جو کے کنارے کہیں زمین تلاش کرلو ۔ حکومت کے پاس زمین کی کمی نہیں ہوتی ہے ۔انہوں نے بی جے پی پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ اس نے ملک کو کمزور کیا ہے اور وہ لوک سبھا الیکشن میں سیاسی فائدہ لینے کے لئے فساد بھڑکانا چاہتی ہے ۔ شیوپال یادو نے کہا کہ ’ ہم بی جے پی کو ملک اور ریاست سے ہٹائیں گے ۔۔ ہم امن اور بھائی چارہ چاہتے ہیں ‘ ریالی میں سماج وادی پارٹی کے بانی ملائم سنگھ یادو بھی آئے ۔ ان کے اس تقریب میں آنے پر شبہ تھا ‘ لیکن وہ نہ صرف شریک ہوئے بلکہ تقریر بھی کی ۔ شیوپال سنگھ نے کہا کہ 1992 میں اس وقت کی بی جے پی کی قیادت والی موجودہ ریاست حکومت کے ذریعہ تحفظ کی گارنٹی کا حلف نامہ دینے کے باوجود بابری مسجدکو منہدم کر دیا گیا تھا ۔ وہ ملک میں پھر سے ویسا ہی آگ پھیلانا چاہتی ہیں ۔ ہم اور نیتا جی (سماج وادی پارٹی کے بانی ملائم سنگھ) مسلمانوں کے ساتھ کھڑے ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT