Tuesday , January 16 2018
Home / اضلاع کی خبریں / بابری مسجد کی شہادت جمہوری ملک ہندوستان کاعظیم سانحہ

بابری مسجد کی شہادت جمہوری ملک ہندوستان کاعظیم سانحہ

٭٭کوہیر منڈل مستقر میںواقع قدیم بس اسٹانڈ پر بابری مسجد کی 22 ویں برسی کے موقع پر سینکڑوں کی تعداد میں مسلم نوجوان نے نعرے تکبیر کی گونج کے ساتھ جمع ہوکر زبردست احتجاجی ریالی منظم کی ۔ ریالی کوہیر کے اہم راستوں سے گذرتے ہوئے کوہیر تحصیل آفس پہنچی جہاں پر معصوم بچوں کے ہاتھوں تحصیلادر کوہیر فرحین شیخ کو ایک میمورنڈم پیش کیا گیا اس کے

٭٭کوہیر منڈل مستقر میںواقع قدیم بس اسٹانڈ پر بابری مسجد کی 22 ویں برسی کے موقع پر سینکڑوں کی تعداد میں مسلم نوجوان نے نعرے تکبیر کی گونج کے ساتھ جمع ہوکر زبردست احتجاجی ریالی منظم کی ۔ ریالی کوہیر کے اہم راستوں سے گذرتے ہوئے کوہیر تحصیل آفس پہنچی جہاں پر معصوم بچوں کے ہاتھوں تحصیلادر کوہیر فرحین شیخ کو ایک میمورنڈم پیش کیا گیا اس کے علاوہ ہر چوراستہ پر جگہ جگہ سیاہ جھنڈے نصب کئے گئے تھے ۔ بعدازاں ریالی ایک جلسہ عام میں تبدیل ہوگئی اس موقع پر محمد شوکت علی سابقہ صدر نشین کوہیر منڈل ، محمد مقبول احمد سابقہ ایم پی ٹی سی ،محمد عمراحمد ٹی آر ایس لیڈر ،رفیع الدین وغیرہ نے مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ بابری مسجد کی دوبارہ اسی مقام پر تعمیر تک ہندوستان میں مسلمان احتجاج کرتے رہیں گے ۔ یہ ملک میں ان کا جمہوری حق ہے اس موقع پر محمد کلیم الدین یوتھ لیڈر محمد شیخ جاوید نائب صدر نشین کوہیر منڈل محمد اشرف علی کوآپشن ممبر کوہیر منڈل محمد ظہیر الدین سکندر، محمد ظہیر الدین محمد عبدالوحید سابقہ ایم پی ٹی سی محمد طاہر ، محمد معز الدین ، محمد اعظم پٹیل ، محمد دجلیل احمد سابقہ کوآپشن محمد پاشاہ میںا ، محمد معین الدین ، محمد ماجد علی ، محمد فاروق علی ،محمد فردوس، محمد اسلم ، محمد سلیم الدین ، محمد عبدالستار ڈپٹی سرپنچ کوہیر، محمد شمس الدین ، محمد شنو محمد عبدالرشید محمد عابد سرور کے علاوہ نوجوانوں کی کثیر تعداد موجود تھے ۔

گمبھی راو پیٹ : گمبھی راو پیٹ میں بابری مسجد کی شہادت کی 22 ویں برسی کے موقع پر تمام مسلمانوں نے یوم سیاہ منایا اور مقامی سرکاری و خانگی مدارس کا بائیکاٹ کیا ۔ بعد نماز ظہر نوجوانوں ا ایک گروپ جن کی قیادت ایم پی ٹی سی رکن محمد حمید الدین خالد، کو آپشن رکن محمد محبوب علی صدر منڈل کانگریس اقلیتی سیل محمد قطب الدین کے علاوہ ایوب خان کررہے تھے امن ریالی کا اہتمام کیا جو جامع مسجد ،گاندھی چوک ،سبھاش نگر سے ہوتے ہوئے تحصیل آفس پہنچی جہاں تحصیلدار گنگیا کو ایک تحریری یادداشت پیش کی گئی جس میں نوجوانوں نے بابری مسجد کی اسی مقام پر تعمیر بابری مسجد کی شہادت میں ملوث فرقہ پرست عناصر کی گرفتاری کا مطالبہ کیا گیا ۔ قبل ازیں بروز جمعہ حافظ و امام جامع مسجد گمبھی راو پیٹ جناب ابواکلام نے مسجد کی بازیابی و نیز مسلمانوں کے جان و مال عزت و آبرو کی حفاظت کیلئے خصوصی دا کی ۔ ریالی میں محمد جلیل ،عمران خان ، حافظ عرفان خان ، محمد روف ، محمد مظفر عبدالرحمن ، محمد عامر ، محمد شاہد علی سید ہاشمی سید ولایت وعیرہ موجود تھے۔

مکتھل : مسلمانان مکتھل نے 6 ڈسمبر کو یوم غم و یوم دعاء مناتے ہوئے بابری مسجد کی شہادت کو سیکولر ملک کی تاریخ میں نا قابل فراموش واقعہ قرار دیا اس کے علاوہ مستقر کی تمام مساجد میں 5 ڈسمبر کو نماز جمعہ کے موقع پر بابری مسجد کی تاریخ اور شہادت اور مسجدکی اسلام میں شرعی حیثیت اور اس سے ہمارا تعلق و ذمہ داری کے عنوان پر علماء کرام نے سیر حاصل روشنی ڈالی ۔ اس کے علاوہ مستقر کے نوجوانوںنے جناب معین الدین کی قیادت میں تحصیلدار مکتھل کو دوبارہ مسجد کی اسی جگہ بازیابی کیلئے ایک یادداشت پیش کی ۔

میدک : میدک ٹاون میں یوم سیاہ منایا گیا ۔ مختلف شاہراہوں پر سیاہ جھنڈے بھی لگائے گئے تھے ۔ مسلمانوں نے پنے کاروبار بند رکھے تھے ۔ غمزدہ نوجوانوں نے نعرہ تکبیر اللہ اکبرکے نعروں کی گونج میں شہید بابری مسجد کی دوبارہ اسی مقام پر تعمیر کرنے اور شہید کرنے والے خاطیوں کو سخت سزائیں دینے کا مطالبہ کیا اور صدر جمہوریہ ہند کو روانہ کردہ ایک یادداشت ایڈمنسٹریٹو آفیسر ٹو آر ڈی او مسٹر کرشنا ریڈی کے حوالے کیا ۔ جس میں بابری مسجد کی بازیابی کا پر زور مطالبہ کیاگیا۔ اس ریالی میں ناظم مدرسہ مدینۃ العلوم مولانا محمد جاوید علی حسامی، مفتی میر عابد علی ندوی ،خواجہ سہیل محی الدین کونسلر ،سمیع اللہ خان سابقہ کونسلر، میر احمد علی بیگ ،مرزا سلیم بیگ پٹیل ، محمد فاروق ، محمد سلیم ،شیخ سلیم ،واجد مظفر ایم اے رئیس ،ایم اے قدوس ،سید اسرار بابا ،سید صادق ، محمد افسر ،سید منیر ، فیروز خان بابو ،طاہر علی ،امیر بیگ ،نعمان فاروق ،سید عمر محی الدین ،نوید ،نواب علی خان ، محمد سلیم وقار بھی موجود تھے بعدازاں مسجد کی بازیابی کیلئے دعا کی گئی ۔ قبل ازیں 5 ڈسمبر کو بعد مغرب مسجد اعظم پورہ میں ایک احتجاجی جلسہ بصدارت جاوید علی حسامی منعقد ہوا اور جس کو مفتی میر عابد علی ندوی برکات احمد ندوی ، محمد سعد الحسینی نے مخاطب کیا۔

بودھن :آج تاریخی بابری مسجد کی یوم شہادت کی 22 برس کے موقع پر بودھن شہر میں مسلم و سیکولر تاجروں نے اپنے کاروبار بند رکھے صبح سویرے سے ہی مسلم نوجوانوں کی کثیر تعداد کالی پٹیاںلگا کر سڑکوں پر گھومتے نظر آئے ۔ ٹھیک گیارہ بجے نوجوانوں کی کثیر تعداد ریالی شکل میں موٹر سیکلوں پر سب کلکٹر آفس بودھن پہونچے اور بابری مسجد کی تعمیر کا مطالبہ کرتے ہوئے آر ڈی او بودھن کو یادداشت حوالے کئے۔

TOPPOPULARRECENT