Sunday , November 19 2017
Home / Top Stories / بابری مسجد کی 24 ویں برسی ‘ شہر میں مختلف تنظیموں کا بند

بابری مسجد کی 24 ویں برسی ‘ شہر میں مختلف تنظیموں کا بند

کمشنر پولیس نے چارمینار پہونچ کر بندوبست کا جائزہ لیا ۔ میلاد جلوس کیلئے بھی انتظامات
حیدرآباد 6 ڈسمبر (سیاست نیوز) بابری مسجد کی شہادت کی 24 ویں برسی کے موقع پر پرانے شہر میں بند کا اثر دیکھا گیا۔ جبکہ نئے شہر اور دیگر علاقوں میں جزوی اثر رہا۔ تفصیلات کے مطابق مختلف تنظیموں کی جانب سے بند کی اپیل کی گئی تھی جس کے نتیجہ میں بعض تجارتی اور تعلیمی ادارے بند رہے۔ بالخصوص پرانے شہر ساؤتھ زون میں حساس علاقوں میں کل سے ہی چوکسی اختیار کرلی گئی تھی اور پولیس نے ریاپڈ ایکشن فورس کو بھی متعین کیا گیا تھا۔ تلنگانہ آرمڈ ریزرو اور اسپیشل پولیس دستے بھی حساس مقامات پر متعین کئے گئے تھے۔ درسگاہ جہاد و شہادت کے احتجاجی کارکن مغلپورہ دفتر سے چارمینار کی سمت بڑھنے کی کوشش کررہے تھے کہ انھیں پولیس نے گرفتار کرلیا۔ صدر ڈی جے ایس مسٹر ایم اے ماجد کو بھی 15 کارکنوں کے ہمراہ گرفتار کیا گیا اور بعدازاں شام میں رہائی عمل میں آئی۔ وحدت اسلامی کی جانب سے مسجد حضرت اُجالے شاہؒ میں بابری مسجد کی بازیابی کا ایک احتجاجی جلسہ کا اہتمام کیا گیا تھا جس سے مولانا محمد نصیرالدین نے خطاب کیا۔ اندرا پارک دھرنا چوک کے قریب بھی مسلم تنظیموں نے بابری مسجد کی بازیابی کے حق میں احتجاجی مظاہرے کئے۔ ڈپٹی کمشنر پولیس مسٹر وی ستیہ نارائنا نے اِس ضمن میں بتایا کہ پرانے شہر کے مختلف مقامات پر 60 مسلح دستوں کو متعین کیا گیا تھا اور یہ پیکٹس کل شام تک موجود رہیں گے۔ ہندو بنیاد پرست تنظیموں کی جانب سے بابری مسجد کی شہادت کی 24 ویں برسی کے موقع پر وجئے دیوس منانے کی کوئی اطلاعات نہیں ہیں۔ کمشنر پولیس مسٹر ایم مہندر ریڈی نے چارمینار پہونچ کر پولیس بندوبست کا جائزہ لیا اور ذرائع ابلاغ سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ حیدرآباد کے پرامن ماحول کو برقرار رکھنے اور عوام کے تحفظ کو یقینی بنانے کے لئے پولیس اپنی توجہ مرکوز کئے ہوئے ہے اور آئندہ دنوں جشن میلادالنبی ﷺ اور مرکزی جلوس کے موقع پر بھی سکیوریٹی کے وسیع تر انتظامات کئے جارہے ہیں۔ انھوں نے کہاکہ اس موقع پر پرانے شہر میں 3 ہزار سے زائد پولیس فورس کو تعینات کیا جارہا ہے جو مرکزی جلوس جس کا آغاز تاریخی مکہ مسجد سے ہوکر پرانے شہر کے مختلف مقامات سے گزرتا ہوا مغل پورہ پلے گراؤنڈ پر اختتام عمل میں آئے گا۔

TOPPOPULARRECENT