Saturday , October 20 2018
Home / شہر کی خبریں / بابری مسجد ہمیشہ کیلئے مسجد تھی اور مسجد رہے گی

بابری مسجد ہمیشہ کیلئے مسجد تھی اور مسجد رہے گی

مسلم پرسنل لا بورڈ سپریم کورٹ کے فیصلہ کا اِنتظار : مولانا خالد سیف اللہ رحمانی کا بیان

حیدرآباد ۔ /15 نومبر (راست) مولانا خالد سیف اللہ رحمانی سکریٹری آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ نے اپنے وضاحتی بیان میں کہا ہیکہ بابری مسجد کے قضیہ میں بورڈ کا موقف بالکل واضح ہے اور وہ بار بار اس موقف کا اظہار کرچکا ہے کہ جس جگہ پر بابری مسجد کی عمارت واقع تھی وہ مسجد تھی ، مسجد ہے اور مسجد رہے گی ، اس مسئلہ پر کئی بار فریقین کی گفت و شنید بھی ہوئی ، لیکن فریق مخالف کی ہٹ دھرمی کی وجہ سے کوئی بات طئے نہیں پاسکی ، اس لئے بورڈ اب عدالت کے فیصلے کا انتظار کرے گا اور سپریم کورٹ کا جو بھی فیصلہ ہوگا ، قانون کے تقاضوں کے مطابق عمل کرے گا ، یہ بات بھی غیر اصولی ہے کہ معاملہ کے جو اصل فریق ہیں ، ان کی طرف سے تو صلح کی کوئی بات سامنے نہ آئی ، لیکن جو لوگ مقدمہ کے فریق نہیں ہیں ، وہ صلح کی بات کرتے ہیں اور صلح کا بھی کوئی منصفانہ فارمولہ پیش نہیں کرتے ، بلکہ چاہتے ہیں کہ قانون سے بغاوت کرکے جن لوگوں نے سنی وقف بورڈ کی مملوکہ زمین پر زبردستی قبضہ کرلیا اور مسجد کو شہید کردیا ، ان کے عمل کو جائز تسلیم کرلیا جائے ، بورڈ کے لئے یہ بات بالکل ناقابل قبول ہے اور وہ اس مقدمہ کی پیروی کے لئے نہ صرف زمین کے حق ملکیت کے سلسلے میں عدل و انصاف حاصل کرنے کی کوشش کررہا ہے ، بلکہ یہ سیکولرازم اور جمہوری نظام کے تحفظ کی بھی جدوجہد ہے ، مسلمانوں کو چاہئیے کہ غلط فہمی پیدا کرنے والے بیانات سے ہرگز متاثر نہ ہوں اور بورڈ پر اپنا بھروسہ قائم رکھیں ۔
۔

 

 

TOPPOPULARRECENT