بات چیت ناکام ہونے پر چین پر نیا ٹیکس عائد کریں گے :ٹرمپ

واشنگٹن۔ 27 نومبر ۔(سیاست ڈاٹ کام) امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے کہا کہ اس ہفتے ارجینٹینامیں چین کے صدر شی جن پنگ کے ساتھ کوئی معاہدہ نہ ہوپانے کی صورت میں چین پر 267ارب ڈالر کا اضافی درآمدات ٹیکس لگایا جائے گا۔ ٹرمپ نے ایک انٹرویو میں اس ضمن میں وارننگ دی ہے ۔اس سے پہلے ٹرمپ نے نامہ نگاروں سے کہا تھا کہ اگر چین امریکہ کے ساتھ نرم رویہ اختیار کرتاہے تو وہ آئندہ G-20 چوٹی کانفرنس سے الگ جن پنگ کے ساتھ تجارتی معاہدے پربات چیت کرسکتے ہیں۔یہ کانفرنس 30نومبر اور یکم دسمبر کو ارجینٹیناکے بیونس آیرس میں منعقد کی جارہی ہے ۔ پیرکو ٹرمپ نے ’وال اسٹریٹ جرنل‘ کے ساتھ اپنے ایک انٹرویو میں کہا کہ چین کے ساتھ معاملت تبھی ممکن ہوگی جب وہ امریکہ کے ساتھ مقابلے کے لئے آگے آئے گا۔اگر ہم کوئی معاملت نہیں کرتے تو میں 267ارب ڈالر کا اضافی ٹیکس لگادوں گا۔ ٹرمپ نے کہا کہ نئے ٹیکس 10سے 25فیصد کی شرح سے ہوں گے اور چین سے درآمدات کئے گئے آئی فون اور لیپ ٹاپ جیسے مصنوعات پر اضافی ٹیکس لگائے جاسکتے ہیں۔ ٹرمپ کے مارچ میں اسٹیل اور ایلیومینیم پر نئے درآمدات ٹیکس لگانے کے اعلان کے بعد چین اور امریکہ تجارت سے متعلق شدید تنازعہ میں الجھ گئے ۔دونوں ملکوں کے درمیان مئی میں تنازعہ اور بڑھ گیا جب ٹرمپ انتظامیہ نے اعلان کیا کہ 50ارب ڈالر کے چینی سازوسامان پر 25فیصد ٹیکس لگایا جائے گا جس کے بدلے میں چین نے امریکی سازوسامان پر اتنی رقم کا ٹیکس لگادیا۔تب سے اب تک ٹرمپ انتظامیہ نے چینی سازوسامان پر 250ارب ڈالر کے ٹیکس لگائے ہیں،جس سے اس نے چین کو بھی بدلے کی کارروائی کرنے پر مجبور کیا۔

روس۔یوکرین تنازعہ پر ٹرمپ ناراض
واشنگٹن ۔ 27 نومبر ۔(سیاست ڈاٹ کام) کریمیا جزیرے کے نزدیک یوکرین کی بحریہ کے تین جہازوں پرروس کے قبضہ کرنے کے اگلے دن امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے کہا ہے کہ روس اور یوکرین کے درمیان جو کچھ بھی ہورہا ہے وہ اسے پسند نہیں کرتے ۔ ٹرمپ نے نامہ نگاروں سے کہا کہ جو کچھ بھی ہورہا ہے وہ ہمیں پسند نہیں ہے اور امید ہے کہ یہ ٹھیک ہو جائے گا۔انہوں نے کہا کہ یورپی رہنماحالات پر کام کررہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ وہ(یورپی رہنما)پرجوش نہیں ہیں ۔ہم سبھی ایک ساتھ کام کررہے ہیں۔روس نے پیر کو مغربی ملکوں کی جانب سے قبضے میں لئے گئے یوکرین بحریہ کے جہازوں اور ان کے ملازمین کو چھوڑنے کے لئے کی گئی اپیل کو نظرانداز کردیا تھا۔

TOPPOPULARRECENT