بات یونیفارم کی نہیں بلکہ ’’خاتون‘‘ ہونے پر متنازعہ ہوگئی:شاہ رخ

ممبئی 12 اگست (سیاست ڈاٹ کام ) کولکتہ میں ایک تقریب کے دوران ایک خاتون کانسٹبل کے ساتھ شاہ رخ خان کے رقص کرنے پر ان پر جاری تنقیدوں کا جواب دیتے ہوئے سوپر اسٹار نے کہا کہ تنقیدیں اس لئے کی جارہی ہیں کہ رقص کرنے والی ایک خاتون تھی۔ یاد رہے کہ گذشتہ ہفتہ محکمہ پولیس کی جانب سے ہی منعقدہ ایک تقریب میں شاہ رخ خان نے ایک لیڈی کانسٹبل کو اٹھال

ممبئی 12 اگست (سیاست ڈاٹ کام ) کولکتہ میں ایک تقریب کے دوران ایک خاتون کانسٹبل کے ساتھ شاہ رخ خان کے رقص کرنے پر ان پر جاری تنقیدوں کا جواب دیتے ہوئے سوپر اسٹار نے کہا کہ تنقیدیں اس لئے کی جارہی ہیں کہ رقص کرنے والی ایک خاتون تھی۔ یاد رہے کہ گذشتہ ہفتہ محکمہ پولیس کی جانب سے ہی منعقدہ ایک تقریب میں شاہ رخ خان نے ایک لیڈی کانسٹبل کو اٹھالیا تھا اور رقص کیاتھا ۔ اس وقت وزیر اعلی مغربی بنگال ممتابنرجی اور دیگر وزراء بھی موجود تھے ۔ اس واقعہ پر ایک نیا تنازعہ پیداہوگیا ہے ۔ بعض وزراء نے خاتون کانسٹبل کو بھی یونیفارم کے ساتھ رقص کرنے پر ہدف تنقید بنایا ہے۔ شاہ رخ خاں نے کہا کہ یہ بڑی عجیب بات ہے ۔

کچھ عرصہ قبل جب وہ ویر زارا کی شوٹنگ کررہے تھے تو انہو ںنے یونیفارم میں موجود فوجی جوانوں کے ساتھ رقص و سرور کی محفل میں حصہ لیا تھا بلکہ اگر یہ کہا جائے کہ انہو ںنے (شاہ رخ) فوجیوں کی زبردست دلجوئی کرتے ہوئے تفریح فراہم کی تھی ۔ 60 ء اور 70 ء کے دہے میں فلمی دنیا کے کئی ایکٹرس اپنے گروپ کے ساتھ سرحدی علاقوں میں جاکر فوجیوں کا دل بہلاتے تھے اور ان کی حوصلہ افزائی کرتے ہوئے ان کے ساتھ رقص بھی کرتے تھے کیونکہ وہ زمانہ جنگ کا تھا۔ شاہ رخ نے کہا کہ بات یونیفارم کی نہیں بلکہ ایک ’’خاتون‘‘ کے رقص کرنے پر تنازعہ کھڑا کیا جارہا ہے جو بالکل بے بنیاد ہے ۔ شاہ رخ خان نے آنے والی نئی فلم اکیس توپوں کی سلامی کے ٹریلر کی اجرائی کے موقع پر یہ بات کہی۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT