Monday , July 16 2018
Home / شہر کی خبریں / باحوصلہ آٹو ڈرائیور کی بیٹی نشاط سلطانہ دختران ملت کیلئے مثال

باحوصلہ آٹو ڈرائیور کی بیٹی نشاط سلطانہ دختران ملت کیلئے مثال

اپنے بابا کے خواب کی تکمیل کیلئے انجینئرنگ میں داخلہ لیا، نمازوں اور تلاوت قرآن پاک کی پابندی ضروری، دوسری لڑکیوں کے نام پیام

حیدرآباد 8 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) حجاب کے خلاف ساری دنیا میں اس طرح مہم چلائی جارہی ہے جس طرح مسلمانوں کے خلاف باضابطہ مہم جاری ہے لیکن ہمارے معاشرہ میں ایسی کئی لڑکیاں یا دختران ملت ہیں جو بڑے فخر کے ساتھ حجاب کا اہتمام کرتی ہیں اور اللہ عزوجل انھیں زندگی میں کامیابی و کامرانی بھی عطا کرتا ہے۔ ہمارے معاشرہ میں یہ بھی دیکھا گیا ہے کہ لوگ غریبی کو حصول علم میں سب سے بڑی رکاوٹ قرار دیتے ہیں لیکن انسان میں کچھ کرنے کا عزم و حوصلہ ہو حصول علم کی تمنا ہو تو غریبی میں بھی تعلیم حاصل کرکے دنیا میں نام پیدا کرلیتا ہے۔ آج کل لڑکیوں میں اس طرح کے عزائم اور حوصلے زیادہ دیکھے جارہے ہیں چنانچہ ایسے ہی باحوصلہ دختران ملت میں بودھن نظام آباد کی رہنے والی 18 سالہ نشاط سلطانہ بھی ہیں، نشاط کے والد آٹو چلاتے ہیں جبکہ والدہ نے ساتویں جماعت تک تعلیم حاصل کی۔ اس جوڑے کو چار بچے (تین بیٹیاں اور ایک بیٹا) ہے۔ مہنگائی کے اس دور میں بڑی کسمپرسی کے حالات ہیں، اس کے باوجود نشاط کے والد محمد عبدالرشید اور والدہ نصرت سلطانہ بارگاہِ رب العزت میں شکر بجا لاتے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ اللہ عزوجل نے انھیں جس حال میں بھی رکھا ہے اس پر اللہ تعالیٰ کا جتنا شکر کیا جائے کم ہے۔ قارئین! محمد عبدالرشید نے ٹرالی آٹو چلانے اور محدود آمدنی کے باوجود اپنے بچوں کی تعلیم پر خصوصی توجہ دی۔ ان کی ہمیشہ یہی خواہش رہی کہ ان کی کم از کم ایک بیٹی انجینئر ضرور بنے۔ اللہ نے ان کی دعا قبول کی اور محمد عبدالرشید کی سب سے چھوٹی لڑکی آج ملک کے مایہ ناز انجینئرنگ کالج مفخم جاہ انجینئرنگ کالج سے بی ای (سی ایس ای) کررہی ہے وہ انجینئرنگ کے سال دوم میں زیرتعلیم ہے اور ڈھائی سال میں ایک قابل انجینئر بن کر نکلے گی۔ نشاط سلطانہ نے بتایا کہ ان کی دو بڑی بہنوں نے ڈائٹ نظام آباد سے ٹی ٹی سی کیا ہے جس میں ایک کی شادی ہوئی ہے۔ ایک بھائی ہے جس نے آئی ٹی آئی کورس کیا ہے اور فی الوقت روزگار کی تلاش میں ہے۔ نشاط کے مطابق بچپن سے ہی انھوں نے اپنے والد کے خواب کو پورا کرنے پر توجہ مرکوز کی اور انجینئر بننے کے مقصد کو لے کر پڑھائی کی چنانچہ ایس ایس سی سری وجئے سائی اسکول بودھن سے کامیاب کیا۔ 9:3 یعنی 93 فیصد نشانات حاصل کئے۔ بعد میں گورنمنٹ پالی ٹیکنک کالج کنٹیشور سے کمپیوٹر مینجمنٹ انجینئرنگ میں ڈپلوما کی تکمیل کرکے مفخم جاہ انجینئرنگ کالج میں اپنے داخلہ کو یقینی بنایا۔ ڈپلوما میں انھیں 90 فیصد نمبرات حاصل ہوئے۔ نشاط سلطانہ کے مطابق وہ ہاسٹل میں رہ کر تعلیم حاصل کررہی ہیں اور ان کی ہر لحاظ سے حوصلہ افزائی میں محترمہ فرزانہ بدر کا اہم رول رہا۔ یہاں اس بات کا تذکرہ ضروری ہوگا کہ فرزانہ بدر ملت کے لئے دردمند دل رکھنے والی خاتون ہیں۔ انھوں نے ہونہار طلباء و طالبات کی مدد اور حوصلہ افزائی کو اپنی زندگی کا مقصد بنالیا ہے۔ فرزانہ میڈم نے نشاط کی بھی حوصلہ افزائی کی۔ اس ہونہار طالبہ کو لیپ ٹاپ بھی بطور تحفہ پیش کیا۔ نشاط بتاتی ہیں کہ لیپ ٹیاپ سے انھیں پراجکٹس کی تکمیل میں کافی مدد مل رہی ہے۔ دختران ملت کے نام اپنے پیام میں نشاط نے کہاکہ دین و دنیا کی کامیابی کے لئے سب سے اہم ماں باپ کی فرمانبرداری ہے۔ اگر اولاد یہ ٹھان لے کہ ہم اپنے ماں باپ کے خوابوں کو سچ کر دکھائیں گے تو دنیا کی کوئی طاقت انھیں کامیابی سے نہیں روک سکتی۔ غریبی خود غربت و افلاس کا شکار ہوجائے گی، نئی راہیں کھلتی جائیں گی۔ نشاط نے یہ بھی کہاکہ خاص طور پر لڑکیوں کو اپنی دنیاوی تعلیم کے ساتھ ساتھ دینی تعلیم پر بھی توجہ مرکوز کرنی چاہئے۔ نمازوں کی پابندی اور پابندی سے تلاوت قرآن پاک ہماری زندگیوں کو پاکیزہ بناتی ہیں۔ آخر میں انھوں نے ایڈیٹر سیاست جناب زاہد علی خاں اور نیوز ایڈیٹر جناب عامر علی خاں کے بارے میں کہاکہ وہ نونہالان ملت کی حوصلہ افزائی کے معاملہ میں سارے ملک کے لئے قابل تقلید ہیں۔

TOPPOPULARRECENT