Friday , January 19 2018
Home / اضلاع کی خبریں / بارش سے متاثرہ کسانوں کو 50 فیصد امداد

بارش سے متاثرہ کسانوں کو 50 فیصد امداد

جگتیال ۔ /15 اپریل (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) ضلع کریم نگر میں ژالہ باری اور غیر موسمی بارش نے تیار فصلوں کو تباہ کردیا ۔ ضلع میں سو کروڑ سے زائد نقصان کا اندازہ لگایا گیا ہے ‘ متاثرہ کسانوں کو مرکزی حکومت سے 50 فیصد امداد کی فراہمی کیلئے ممکنہ اقدامات کئے جائنگے ‘ان خیالات کا اظہار تلنگانہ سے تعلق رکھنے والے مرکزی وزیر مسٹر بنڈارو دتاتریہ ن

جگتیال ۔ /15 اپریل (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) ضلع کریم نگر میں ژالہ باری اور غیر موسمی بارش نے تیار فصلوں کو تباہ کردیا ۔ ضلع میں سو کروڑ سے زائد نقصان کا اندازہ لگایا گیا ہے ‘ متاثرہ کسانوں کو مرکزی حکومت سے 50 فیصد امداد کی فراہمی کیلئے ممکنہ اقدامات کئے جائنگے ‘ان خیالات کا اظہار تلنگانہ سے تعلق رکھنے والے مرکزی وزیر مسٹر بنڈارو دتاتریہ نے آج جگتیال منڈل موضع چلگل میں اس ماہ کی /6 تاریخ کو ژالہ باری اور غیر موسمی بارش سے تباہ شدہ موز اور دھان ، آم کی فصلوں کا معائنہ کرنے کے بعد میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کیا ۔ انہوں نے کہا کہ کسانوں کو اس ہفتہ ہاتھ آنے والی فصلوں کو غیر موسمی بارش تباہ کردیا ۔ غیر موسمی بارش سے تل اور دھان آم اور مکئی ، موز کی فصل کو بڑا نقصان پہنچا ہے ۔

مرکزی حکومت اور وزیراعظم نریندر مودی نے کسان برادری کی بھلائی کا خیال کرتے ہوئے قبل از وقت پارلیمنٹ اجلاس میں دواہم مدعوں پر فیصلہ کرتے ہوئے غیر موسمی بارش اور دیگر حالات میں فصلوں کو ہونے والے نقصانات پر امداد کی فراہمی کیلئے فیصلہ کیا ۔سابق میں 50 فیصد فصل کو نقصان والے متاثرہ کسان کو صرف 30 فیصد امداد دی جاتی تھی ۔ وزیراعظم نے 50 فیصد فصل کے بجائے اس میں 33 فیصد کی کمی کی اور نقصان ہونے والوں کیلئے 50 فیصد کی امداد فراہم کرنے کیلئے مرکزی حکومت نے 210 جی او پر عمل آوری کیلئے منظوری دی ۔ یکم اپریل 2015 ء سے 50 فیصد امداد پر عمل آوری کیلئے انہوں نے تیقن دیا اور فصل بیما انشورنس ایجنسی کے تحت فصل نقصانات پر کسانوں کی امداد کیلئے مرکزی اگریکلچر وزیر اور وزیر فینانس سے بات چیت کرتے ہوئے فصل بیما انشورنس ایجنسی کسانوں کو فائدہ پہنچانے کی بات کی اور اس سلسلہ میں بینک کے طریقہ کار میں کسانوں میں پائی جانے والی بے چینی کو دور کرنے اور اس میں تبدیلی کا بھی تیقن دیا ۔ آم کی فصل پر سابق میں نیچے گرنے والے پھل پر امداد نہیں دی جاتی تھی ۔ مرکزی حکومت وزیراعظم نے اس امداد کو دگنا کردیا ۔ تلنگانہ کسانوں کو خصوصی امداد کیلئے مرکزی حکومت سے ہرممکنہ اقدامات کا تیقن دیا ۔

اس موقعہ پر خیریت آباد کے بی جے پی رکن اسمبلی چنتلہ رام چندر ریڈی نے ریاستی حکومت پر سخت تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ /6 تاریخ کو غیر موسمی بارش سے اتنے بڑے پیمانے پر تباہی ہوئی اس کے باوجود کسانوں کی امداد کیلئے ریاستی حکومت حرکت میں نہیں آئی ۔ آج جب بی جے پی پارٹی نے مرکزی حکومت سے غیرموسمی بارش سے نقصانات سے آگاہ کرتے ہوئے مرکزی وزراء کو طلب کیا گیا ۔ جس کو دیکھ کر مرکزی وزیر کی آمد پر ریاستی وزراء نقصانات کا جائزہ لینے کا الزام لگایا اور انہوں نے اس موقعہ پر میڈیا کے سامنے ریاستی حکومت سے ڈیمانڈ کیا کہ مرکزی حکومت کی جانب سے متاثرہ کسانوں کو دی جانے والی Input سبسیڈی کتنی ہے اور ریاستی حکومت کتنا ملاکر دے رہی ہے ۔ آج ہی اس پر عمل آوری ہو اور اس کی وضاحت کی جائے اس موقعہ پر ان کے ہمراہ جوائنٹ کلکٹر شریمتی کوسومی باسو اور رکن اسمبلی جگتیال مسٹر ٹی جیون ریڈی دیگر موجود تھے ۔ بنڈارودتاتریہ کے قافلے کو راستے میں ریاستی وزراء وزیر پنچایت کے ٹی آر اور وزیر فینانس ایٹالہ راجیندر اور رکن اسمبلی گنگولہ کملہ کر ریڈی چیرمین تولہ اونے موضع چلگل اور نرسنگاپور کا معائنہ کرتے ہوئے واپسی میں ملے ۔ بعد ازاں ریاستی وزراء دیگر مواضعات تاٹ پلی ، کٹلہ کنٹہ کے متاثرہ علاقوں کا معائنہ کرنے کیلئے روانہ ہوئے ۔

TOPPOPULARRECENT