Tuesday , December 11 2018

بارہمولہ میں جنگجوؤں کی ہلاکت کیخلاف ہڑتال، ریل خدمات معطل

سری نگر۔ 14نومبر ۔(سیاست ڈاٹ کام) شمالی کشمیر میں منگل کے روز ریل خدمات سکیورٹی وجوہات کی بناء پر معطل رکھی گئی۔ یہ خدمات ضلع کپواڑہ کے زچلڈارہ میں پیر کی شام پیش آئے مسلح تصادم میں دو جنگجوؤں کی ہلاکت کے خلاف احتجاجی مظاہروں کے خدشے کے پیش نظر معطل رکھی گئی ہے ۔ اس دوران ضلع بارہمولہ سے موصولہ اطلاعات کے مطابق جنگجوؤں کی ہلاکت کے خلاف ان کے آبائی علاقوں پلہالن اور براٹھ کلان سوپور میں منگل کو مکمل ہڑتال کی گئی۔ تاہم جنوبی کشمیر میں دو مختلف مقامات پر جنگجو مخالف آپریشنوں کے باوجود وسطی کشمیر کے بڈگام اور جموں خطہ کے بانہال کے درمیان براستہ جنوبی کشمیر ریل خدمات چلتی رہیں۔ریلوے کے ایک سینئر عہدیدار نے یو این آئی کو بتایا وسطی کشمیر کے سری نگر اور شمالی کشمیر کے بارہمولہ کے درمیان ریل خدمات کو منگل کے روز سکیورٹی وجوہات کی بناء پر معطل رکھا گیا۔ انہوں نے بتایا کہ ہمیں گذشتہ رات پولیس کی طرف سے ایک اڈوائزری موصول ہوئی جس میں شمالی کشمیر میں آج ریل خدمات معطل رکھنے کے لئے کہا گیا تھا۔ اس اڈوائزری پر عمل درآمد کے طور پر ہم نے منگل کو شمالی کشمیر میں ریل خدمات معطل رکھیں۔ قابل ذکر ہے کہ ہندواڑہ کے زچلڈارہ میں پیر کی شام ایک مسلح تصادم میں دو جنگجوؤں کو ہلاک کیا گیا۔ مارے گئے جنگجوؤں کی شناخت عاشق احمد ساکن پلہالن پٹن اور طیب مجید میر ساکنہ براٹھ کلان سوپور کے بطور کی گئی ہے ۔ ریاستی پولیس کے سربراہ شیش پال وید نے ایک ٹویٹ میں کہا کہ زچلڈارہ ہندوارہ میں جموں وکشمیر پولیس، فوج اور سی آر پی ایف نے ایک مشترکہ آپریشن کے دوران دو جنگجوؤں کو ہلاک کیا۔

TOPPOPULARRECENT